اٹلی، گزشتہ روز کشتی الٹنے کے بعد لاپتہ ہونے والے تین تارکین وطن کی لاشیں برآمد

وسطی بحیرہ روم کا راستہ، اٹلی، مالٹا، لیبیا اور تیونس کے درمیان یورپ کی طرف نقل مکانی کے  غیر قانونی  واقعات کا سب سے زیادہ سامنا کرنے والا مقام ہے

2154097
اٹلی، گزشتہ روز کشتی الٹنے کے بعد لاپتہ ہونے والے تین تارکین وطن کی لاشیں برآمد

اٹلی کے جنوب میں گزشتہ روز کشتی الٹنے کے بعد لاپتہ ہونے والے تین تارکین وطن کی لاشیں برآمد ہوئی ہیں۔

اطالوی کوسٹ گارڈ کمانڈ سے وابستہ دتیلو  بحری جہاز نے گزشتہ روز کشتی الٹنے والے مقام سے لاپتہ تارکین وطن میں سے 3 کی لاشیں کیلابریا کے ساحل سے تقریباً 100 میل دور سمندر سے  برآمد کی ہیں۔

اطالوی کوسٹ گارڈ ٹیموں کی علاقے میں تلاش اور بچاؤ کی کوششیں جاری ہیں تو یہ بات نوٹ کی گئی کہ آدھی ڈوبی ہوئی کشتی کے ملبے کا جائزہ لیا گیا  ہے اور اس کے  اندر سے کوئی نہیں ملا۔

گزشتہ روز مذکورہ کشتی الٹنے کی پہلی خبر میں بتایا گیا تھا کہ ایک مال بردار جہاز نے 12 تارکین وطن کو بچالیا ہے  اور ان کے بیانات کے مطابق 50 سے زائد افراد لاپتہ ہیں، بعد ازاں لاپتہ تارکین وطن کی تعداد     66 بتائی گئی تھی جن میں سے 26  بچے تھے۔

وسطی بحیرہ روم کا راستہ، اٹلی، مالٹا، لیبیا اور تیونس کے درمیان یورپ کی طرف نقل مکانی کے  غیر قانونی  واقعات کا سب سے زیادہ سامنا کرنے والا مقام ہے۔

کشتیاں الٹنے، کشتیوں پر زیادہ بھیڑ ہونے ، پانی اور ہوا کے بغیر رہ جانے یا خارج ہونے والی گیسوں سے  متاثر   ہونے والے بڑی تعداد میں تارکین وطن بحیرہ روم کو عبور کرنے کی کوشش کے دوران اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں ۔



متعللقہ خبریں