پوپ فرانسس کا سویڈن میں قرآن کریم نذر آتش کرنے پر غمو غصے کا اظہار

پوپ فرانسس، جنہوں نے متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کے اخبار الاتحاد کو انٹرویو دیا، ایک سوال پر سویڈن میں قرآن کے خلاف اشتعال انگیزی پر اپنے خیالات کا اظہار کیا ہے

2006343
پوپ فرانسس کا سویڈن میں قرآن کریم نذر آتش کرنے پر غمو غصے کا اظہار

کیتھولک فرقے  کے روحانی پیشوا اور ویٹیکن سٹی  کے سربراہ پوپ فرانسس نے کہا کہ سویڈن کے دارالحکومت سٹاک ہوم میں ایک مسجد کے سامنے قرآن پاک کو جلانے کے واقعے پر اپنے غم وغصے کا اظہار کیا ہے۔

پوپ فرانسس، جنہوں نے متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کے اخبار الاتحاد کو انٹرویو دیا، ایک سوال پر سویڈن میں قرآن کے خلاف اشتعال انگیزی پر اپنے خیالات کا اظہار کیا ہے۔

انہوں نے اپنے بیان میں کہا  کہ ایسی حرکت پر انہیں شدید غصہ ہے  اور مجھے ایسی حرکتوں سے نفرت ہے۔ پوپ نے کہا کہ ہر وہ کتاب جو مقدس سمجھی جاتی ہے اس کے ماننے والوں کو اس کا احترام کرنا چاہیے۔

پوپ فرانسس نے کہا کہ "اظہار رائے کی آزادی کو کبھی بھی دوسروں کو نیچا دکھانے کے لیے استعمال نہیں کیا جا سکتا۔ اس کی اجازت دینا ناقابل قبول ہے، یہ ایک قابل مذمت عمل ہے۔

انہوں نے کہا کہ  ان کا مشن مذہبی جذبات کو تعاون، بھائی چارے اور ٹھوس اقدامات میں تبدیل کرنا ہے، پوپ نے کہا، "آج ہمیں امن قائم کرنے والوں کی ضرورت ہے، ہتھیار بنانے والوں کی نہیں۔ ہمیں پرامن لوگوں کی ضرورت ہے، تنازعات کو بھڑکانے والوں کی نہیں۔ ہمیں آگ بجھانے والوں کی ضرورت ہے، آتش زنی کرنے والوں کی نہیں۔  یا تو ہم مل کر مستقبل بنائیں یا کوئی مستقبل نہیں۔

پوپ نے کہا کہ بین المذاہب تعاون کا مستقبل باہمی تعاون، دوسروں کے احترام اور سچائی پر مبنی ہے۔

عراقی نژاد سلوان مومیکا نے 28 جون کو سٹاک ہوم کی مسجد کے سامنے پولیس کی حفاظت میں قرآن مجید کو نذر آتش کیا۔



متعللقہ خبریں