یورپ کو وباء کی نئی لہر کا خطرہ، یورپی یونین ممالک نے شینگین سمجھوتے کو عملاً معطل کر دیا

کووِڈ۔19 کی نئی لہر کے خطرے کی وجہ سے بعض یورپی ممالک نے حفاظتی تدابیر سخت کرنا شروع کر دیں، یورپ میں آزادانہ سیاحت کا سمجھوتہ عملاً معطل ہو گیا

1594198
یورپ کو وباء کی نئی لہر کا خطرہ، یورپی یونین ممالک نے شینگین سمجھوتے کو عملاً معطل کر دیا

یورپی یونین  کی حکم عدولی کے باوجود یونین کے بعض اراکین نے کورونا وائرس حفاظتی تدابیر کے دائرہ کار میں یورپ میں آزادانہ سیاحت کے سمجھوتے شینگین کو "عملاً معطل" کر دیا ہے۔

مذکورہ ممالک نے ملک میں داخلے و خروج کو وسیع پیمانے پر  بند کرنا شروع کر دیا ہے۔

کووِڈ۔19 کی تبدیل شدہ اور زیادہ خطرناک  قسم  کی وجہ سے وباء کی نئی لہر کے خطرے کی وجہ سے یورپی یونین ممالک  میں سے بعض حالیہ ہفتوں میں حفاظتی تدابیر کو سخت کر رہے ہیں۔حفاظتی تدابیر سخت کرنے والے  ممالک میں خاص طور پر جرمنی، بیلجئیم، ڈنمارک، فن لینڈ، سویڈن اور ہنگری شامل ہیں۔

مذکورہ ممالک   کی طرف سے سرحدی چیکنگ، بعض علاقوں میں داخلے و خروج کی ممانعت  اور انتہائی مجبوری  کے علاوہ ملک میں داخلے کی اجازت نہ دئیے جانے پر یورپی یونین نے گذشتہ ہفتے ان ممالک کو مراسلے روانہ کئے اور آزادانہ نقل و حرکت میں رکاوٹ نہ بننے کی اپیل کی ہے۔

لاک ڈاون میں "حد سے تجاوز کرنے" کی وجہ سے تنقید کا نشانہ بننے والے ان ممالک کا  رواں ہفتے میں حالات کی توضیح کرنا ضروری ہے۔

واضح رہے کہ مارچ 2020 میں بھی کورونا  حفاظتی تدابیر کے دائرہ کار میں یورپی یونین ممالک نے ایک دوسرے کے ساتھ سرحدیں بند کر دی تھیں۔



متعللقہ خبریں