یمن میں جنوبی عبوری کونسل کے یکطرفہ خود مختاری کے اعلان پر یورپی یونین کا رد عمل

سعودی دارالحکومت ریاض میں 5 نومبر 2019 کو یمنی حکومت اور جنوبی عبوری کونسل کے مابین معاہدے  کے ایک اہم اور مثبت پیش رفت  ہے

1406200
یمن میں جنوبی عبوری کونسل کے یکطرفہ خود مختاری کے اعلان پر یورپی یونین کا  رد عمل

یورپی یونین  نے واضح کیا ہے  کہ یمن مین متحدہ  عرب امارات کی حمایت یافتہ  جنوبی عبوری کونسل کی جانب سے ملک کے جنوبی علاقوں میں خود مختاری کا اعلان کرنے  سے اس ملک میں جنگ کے خاتمے، استحکام اور قیام امن کی کوششوں کو نقصان پہنچائیں گی۔

یورپی یونین کمیشن کے ترجمان پیٹر سٹینو نے یومیہ پریس کانفرس میں   کہا ہے کہ سعودی دارالحکومت ریاض میں 5 نومبر 2019 کو یمنی حکومت اور جنوبی عبوری کونسل کے مابین معاہدے  کے ایک اہم اور مثبت پیش رفت  ہے۔

اسٹینو کا کہنا ہے کہ یمنی عوام کی بنیادی ضرورت ’’امن‘‘  کا قیام ہے۔ عبوری کونسل کا اعلان ریاض معاہدے کی خلاف ورزی ہے  اور یہ بیک وقت اقوام متحدہ کی ملک میں جنگ کے خاتمے اور استحکام کے قیام کی کوششوں کو نقصان پہنچا رہی ہے۔

یورپی یونین    کی جانب سے یمن کے تمام تر طرفین کو  ریاض معاہدے کی شقو ں پر کار بند رہنے کی ضرورت  پر زور دیے جانے کی وضاحت کرنے والے سانٹو   نے کہا کہ یمنی عوام کو مزید دکھ پہنچانے سے اجتناب برتنی چاہیے۔



متعللقہ خبریں