فرانس: ییلو جیکٹ مظاہرین پھر سڑکوں پر نکل آئے

فرانس میں ییلو جیکٹ مظاہرین نے مظاہروں کے 46 ویں ہفتے میں صدر امانوئیل ماکرون کی پالیسیوں کے خلاف احتجاج کیا

1278187
فرانس: ییلو جیکٹ مظاہرین پھر سڑکوں پر نکل آئے

فرانس میں ییلو جیکٹ مظاہرین نے مظاہروں کے 46 ویں ہفتے میں صدر امانوئیل ماکرون کی پالیسیوں کے خلاف احتجاج کیا۔

مظاہرین نے دارالحکومت پیرس کی مختلف شاہراہوں پر مارچ کی اور ماکرون انتظامیہ کے خلاف نعرے لگائے۔

سخت حفاظتی اقدامات  کے تحت کئے گئے مظاہروں میں کسی قسم کا منفی واقعہ پیش نہیں آیا۔

پولیس نے شانزے لیزے شاہراہ پر ماہ اپریل میں آتشزدگی کی وجہ سے نقصان اٹھانے والے کلیسا نوٹر ڈیم کتھیڈرل  کے اطراف میں مظاہروں کی اجازت نہیں دی۔

تاہم تولوس میں کئے گئے مظاہروں  میں پولیس اور مظاہرین کے درمیان کشیدگی  پیدا ہوئی۔مظاہرین نے کیپیٹل اسکوائر میں  ایک ریسٹورنٹ کے ٹیرس  پر موجود بڑی چھتری کو آگ لگا دی اور پولیس نے مظاہرین کے خلاف آنسو گیس اور تیز دھار پانی کا استعمال کیا۔

مظاہرے میں 5 افراد کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

ملک کے مختلف شہروں میں منعقدہ احتجاجی مظاہروں میں شریک مظاہرین کی تعداد کے بارے میں وزارت داخلہ کی طرف سے کوئی بیان جاری نہیں کیا گیا۔

واضح رہے کہ فرانس میں 17 نومبر 2018 میں پیٹرول کی قیمتوں اور خراب اقتصادی حالات کے خلاف ردعمل کے طور پر مظاہرے شروع ہوئے جو بعد ازاں ماکرون انتظامیہ  کے خلاف مظاہروں میں تبدیل ہو گئے اور کئی ماہ سے جاری ہیں۔

مظاہروں میں اس وقت تک 11 افراد ہلاک اور 4 ہزار 245 زخمی ہو چکے ہیں جبکہ 12 ہزار 107 سے زائد کو حراست میں لیا جا چکا ہے۔



متعللقہ خبریں