برطانوی دارالعوام نے یورپی یونین سے علیحدہ ہونے کے بل منظوری دے دی

برطانوی دارالعوام نے یورپی یونین سے علیحدگی کے لیے وزیراعظم تھریسامے کو مکمل اختیار دے دیا ہے

668636
برطانوی دارالعوام نے یورپی یونین سے علیحدہ ہونے کے بل منظوری دے دی

 

برطانوی دارالعوام نے یورپی یونین سے علیحدہ ہونے کا بل منظور کرلیا ہے۔

برطانوی دارالعوام نے یورپی یونین سے علیحدگی کے لیے وزیراعظم تھریسامے کو مکمل اختیار دے دیا ہے اور اس حوالے سے دارالعوام میں ہونے والی ووٹنگ میں بریگزٹ کے حق میں 494 جبکہ مخالفت میں 122 ووٹ ڈالے گئے جس کے بعد یورپی یونین سے علیحدگی کے بل کو منظور کرلیا گیا۔ بریگزٹ پر عمل درآمد ہاؤس آف لارڈز کی منظوری کے بعد شروع ہو گا۔اگر ہاؤس آف لارڈز نے بریگزٹ  کی توثیق کر دی  تو پھر اسے آخری منظوری اور عمل درآمد کے لیے ملکہ برطانیہ کو پیش کیا جائے گا ۔ حکومت اس قانون پر سات مارچ  تک عمل درآمد کروانے کا ہدف رکھتی ہے ۔ سرکاری طور پر مذاکرات کا عمل شروع ہونے کے  دو سال بعد برطانیہ یورپی یونین سے علیحدہ ہو جائے گا ۔

واضح رہے کہ اس قانون کی منظوری کے بعد برطانیہ میں مقیم یورپی شہریوں کو مستقل رہائش نہیں مل سکے گی۔



متعللقہ خبریں