مشرق وسطی سے یورپ کی طرف نقل مکانی ایک سماجی حقیقت ہے

پوپ فرانسس نے شام سمیت مشرق وسطی میں جنگ سے فرار ہو کر یورپ میں پناہ لینے والوں کو "عرب قابضوں " کا نام دیا ہے

445508
مشرق وسطی سے یورپ کی طرف نقل مکانی ایک سماجی حقیقت ہے

پوپ فرانسس نے شام سمیت مشرق وسطی میں جنگ سے فرار ہو کر یورپ میں پناہ لینے والوں کو "عرب قابضوں " کا نام دیا ہے۔

مہاجرین کے بحران سے متعلق ویٹیکن پریس "اوسرواٹو رومانو" کے لئے اپنے انٹرویو میں پوپ فرانسس نے کہا ہے کہ مشرق وسطی سے یورپ کی طرف نقل مکانی ایک سماجی حقیقت ہے۔

پوپ نے کہا کہ "اس وقت ہم ایک عرب قبضے کا ذکر کر سکتے ہیں۔ یورپ کو اپنی پوری تاریخ میں کتنی دفعہ قبضے کا سامنا ہوا؟ لیکن ہر دفعہ یورپ اس پر غلبہ حاصل کر کے بین الثقافتی لین دین کے ذریعے پھلنے پھولنے میں کامیاب رہا ہے"۔

پوپ فرانسس نے کہا کہ انسانی بحران سے صرف نظر نہیں برتا جائے گا بلکہ یورپ متحد ہو کر مہاجرین کے بحران پر قابو پا لے گا۔

انہوں نے کہا کہ "یورپ کو قومی انا، سیاسی کھیلوں اور چھوٹے چھوٹے حسابوں کے سامنے گردن نہیں جھکانا چاہیے۔ مول تول کی میز پر آنا بہت ضروری ہے۔ کامیابی کے لئے ہمیں بعض چھوٹی چیزوں کی قربانی دینا ہوگی"۔



متعللقہ خبریں