روس اور یوکرین جنگ کی وجہ سے ہونے والا سانحہ دن بہ دن سنگین تر ہوتا جا رہاہے: وزیر خارجہ حقان فیدان

وزیر  خارجہ فیدان نےان خیالات کا اظہار  کل سوئٹزرلینڈ کی میزبانی میں نیڈوالڈن کے کینٹن کے برگن اسٹاک قصبے میں منعقدہ یوکرین امن سربراہی اجلاس سے خطاب  کرتے ہوئے کیا

2153414
روس اور یوکرین جنگ کی وجہ سے ہونے والا سانحہ دن بہ دن سنگین تر ہوتا جا رہاہے: وزیر خارجہ حقان فیدان

وزیر خارجہ حقان  فیدان نے کہا کہ روس اور یوکرین جنگ کی وجہ سے ہونے والا سانحہ دن بہ دن سنگین تر ہوتا جا رہا ہے اور جغرافیائی طور پر پھیلنے کا خطرہ ہے۔

وزیر  خارجہ فیدان نےان خیالات کا اظہار  کل سوئٹزرلینڈ کی میزبانی میں نیڈوالڈن کے کینٹن کے برگن اسٹاک قصبے میں منعقدہ یوکرین امن سربراہی اجلاس سے خطاب  کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ  یورپ کے وسط میں دو سال سے زیادہ عرصے سے تباہ کن جنگ جاری ہے، فیدان نے کہا کہ ہلاک اور زخمی ہونے والوں کی تعداد 500 ہزار سے تجاوز کر گئی اور یہ جنگ عدم ​​استحکام کی جنگ میں بدل گئی۔

انہوں نے کہا کہ تنازعہ نے فالٹ لائنوں کو گہرا کیا ہے اور عالمی سطح پر پولرائزیشن کو ہوا دی ہے، فیدان نے نشاندہی کی کہ یوکرین اور روس کے درمیان تنازع جلد ہی جنگ سے بڑھ کر کسی چیز میں بدل سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ آج کی کانفرنس پل سے پہلے آخری ایگزٹ ہو سکتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ  ترکیہ اس مسئلے کے منصفانہ اور مستقل حل کے لیے بین الاقوامی کوششوں کی مکمل حمایت کرتا ہے، فیدان نے کہا کہ ترکیہ سفارت کاری اور مذاکرات کے ذریعے جلد از جلد جنگ کے خاتمے کا حامی ہے۔

فیدان نے اس بات کی نشاندہی کرتے ہوئے جاری رکھا کہ ترکیہ نے جنگ کے آغاز کے بعد سے سفارتی کوششوں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مارچ 2022 میں استنبول مذاکرات اور بلیک سی گرین انیشیٹو بہت اہم اشارے ہیں کہ سفارت کاری اور مذاکرات میں پیش رفت ہو سکتی ہے۔ ترکیہ ہمیشہ کی طرح اس عمل کو آسان بنانے کے لیے تیار ہے۔

انہوں نے کہا کہ  جو چیز بلیک سی گرین انیشیٹو کو کامیاب اور منفرد بناتی ہے وہ اس کی جامع نوعیت ہے، فیدان نے کہا کہ یہ اقدام دونوں فریقوں کے لیے پیشین گوئی فراہم کرتا ہے اور سمندری تجارت کے لیے بحری حفاظت کو یقینی بناتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ  ترکیہ امن کے لیے کوششیں جاری رکھے گا، فیدان نے کہا کہ ترکیہ یوکرین کی علاقائی سالمیت، خودمختاری اور آزادی کے لیے اپنی پرعزم حمایت جاری رکھے ہوئے ہے۔ ہمارا امن کا وژن حقیقت پسندانہ، جامع اور عملی ہے۔ ہم اس مقصد کے لیے مستقبل کے حوالے سے روڈ میپ بنانے کے لیے پرعزم ہیں۔ جیسا کہ صدر ایردوان نے کہاہے کہ انصاف پسند امن  میں  کسی کی کوئی ہار نہیں ہوتی۔

دوسری جانب وزیر فیدان نے سربراہی اجلاس کے دائرہ کار میں عراق کے نائب وزیر اعظم اور وزیر خارجہ فواد حسین سے بھی ملاقات کی۔



متعللقہ خبریں