یونان کو غیر فوجی  جزائر کی حیثیت   کی خلاف ورزیوں سے باز  آ جانا چاہیے، ترک وزیر خارجہ

اس ملک نے اپنے وعدوں کی   پاسداری نہیں کی  اور غیر فوجی  جزائر کی  حیثیت اور حاکمیت کے درمیان براہ راست تعلق موجود ہے

1915437
یونان کو غیر فوجی  جزائر کی حیثیت   کی خلاف ورزیوں سے باز  آ جانا چاہیے، ترک وزیر خارجہ

وزیر خارجہ میولود چاوش  اولو   کا کہنا تھا  کہ یونان کو غیر فوجی  جزائر کی حیثیت   کی خلاف ورزیوں سے باز  آ جانا چاہیے،    یونان  یا تو معاہدوں پر عمل درآمد کرے گا یا پھر  ہم   لازمی اقدام اٹھائیں گے۔

وزیر چاوش اولو نے رومانیہ کے وزیر خارجہ بوگدان اوریسکو  سے دفتر خارجہ میں  ملاقات کے بعد دارالحکومت انقرہ میں مشترکہ پریس کانفرنس  کا اہتمام کیا۔

یونان کی روڈز اور لیسبوس جزائر میں فوجی مشقوں کے بارے میں ایک سوال  کے جواب میں   ترک وزیر نے بتایا کہ ، "بدقسمتی سے یونان اشتعال انگیزی جاری رکھے ہوئے ہے۔ یقیناً ہمارے لیے اس کے بر خلاف  خلاف خاموش رہنا  ناممکن ہے۔"

انہوں نے بتایا  کہ یونان کی جانب سے غیر عسکری  جزائر کی حیثیت کی خلاف ورزی کے بعد ترکیہ کی جانب سے اقوام متحدہ کو قانونی دلائل پر مشتمل خطوط نے یونان کو  طیش دلایا ہے۔ "ان جزائر اور کچھ دیگر  جزائر کو  1923 کے لوزان اور 1947 کے پیرس امن معاہدے  کے تحت اور ایک شرط پر یونان کی ملکیت میں دیا گیا تھا۔ یونان ان علاقوں کو مسلح نہیں کر سکتا کیونکہ اس معاہدے کو 'امن معاہدہ' کہا جاتا ہے ۔

انہوں نے زور دیتے ہوئے کہا کہ  اس ملک نے اپنے وعدوں کی   پاسداری نہیں کی  اور غیر فوجی  جزائر کی  حیثیت اور حاکمیت کے درمیان براہ راست تعلق موجود ہے۔

انہوں نے مزید  بتایا کہ "اگر یونان اس خلاف ورزی سے باز نہیں آتا ہے تو ان کی خودمختاری پر بات کی جائے گی۔ دوسری طرف، یونان ہماری سلامتی کے لیے ان معاہدوں کے باوجود منفی اقدامات کر رہا ہے، ان مقامات کو مسلح کر رہا ہے اور دیگر اقدامات  اٹھا رہا  ہے۔"

اس لیے ہمارے لیے اس کے خلاف خاموش رہنا ممکن نہیں۔ دوسرے لفظوں میں، یونان کو غیر فوجی جزیروں کی حیثیت کی خلاف ورزی ترک کر دینی چاہیے۔ یا تو یونان ایک قدم پیچھے ہٹے اور ان معاہدوں کی پاسداری کرے یا ہم وہ کریں گے  جو ضروری ہوا۔

ہم قانونی بنیادوں اور بین الاقوامی تنظیموں، خاص طور پر اقوام متحدہ اور فیلڈ میں  ضروری اقدامات کرتے رہیں گے۔ ہم تمام ضروری احتیاطی تدابیر اختیار کریں گے۔



متعللقہ خبریں