روس- یوکرین حنگ میں اناج کی ترسیل کے متبادل راستوں پر غور: وزیر خارجہ چاوش اولو

چاوش اولو  نے کہا کہ سہ فریقی فارمیٹ میں میٹنگ پہلی بار منعقد ہوئی، اور نقل و حمل کے مسائل کے علاوہ علاقائی مسائل پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا ہے

1848589
روس- یوکرین حنگ میں اناج کی ترسیل کے متبادل راستوں پر غور: وزیر خارجہ چاوش اولو

وزیر خارجہ  میولود چاوش اولو ، روس-یوکرین جنگ کی وجہ سے اناج سے لدے  ٹریلرز کی بندرگاہوں سے نکلنے میں ناکامی کے بارے میں کہا ہے کہ ہم نے اس بحران میں ایک بار پھر دیکھا ہے کہ پائیدار اور محفوظ نقل و حمل کی لائنیں کتنی اہم ہیں۔

وزیر  خارجہ چاوش اولو نے ان خیالات کا اظہار  آذربائیجان کے وزیر خارجہ جے ہون بائراموف  اور قازقستان کے وزیر خارجہ مختار تلیبردی کے ساتھ آذربائیجان کے دارالحکومت باکو میں منعقدہ ترکی-آذربائیجان-قازقستان کے وزرائے خارجہ اور ٹرانسپورٹ کے اجلاس کے بعد منعقدہ مشترکہ پریس کانفرنس  سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

چاوش اولو  نے کہا کہ سہ فریقی فارمیٹ میں میٹنگ پہلی بار منعقد ہوئی، اور نقل و حمل کے مسائل کے علاوہ علاقائی مسائل پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا ہے۔

یوکرین-روس جنگ کی وجہ سے پیدا ہو نے والے  اناج کی تجارت کے مسائل کا ذکر کرتے ہوئے چاووش اولو نے کہا کہ ہم اقوام متحدہ کے ساتھ اس مسئلے کو حل کرنے کی بھرپور کوششیں کر رہے ہیں۔ ہم نے اس بحران میں ایک بار پھر دیکھا ہے کہ پائیدار اور محفوظ ٹرانسپورٹ لائنز کتنی اہم ہیں۔

انہوں نے کہا کہ  ہم نے اپنی قومی اور علاقائی صلاحیت کو بڑھانے کے لیے اہم سرمایہ کاری کی ہے اور کرتے رہیں گے انہوں نے کہا کہ  باکو، تبلیسی  اور قارس  ریلوے  لائین نے  اور  باکو ، تنبیلیسی  جیہان  پائپ لائن اور TANAP جیسے منصوبوں نے ہمارے خطے کا چہرہ بدل دیا ہے۔

وزیر خارجہ میولود چاوش اولو  نے کہا کہ ترکی،  آذربائیجان اور آرمینیا کے درمیان  جاری  مذاکراتی  عمل کی حمایت کرتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم  آذربائیجان اور ناہچیوان کے مغربی علاقوں کو آپس میں ملانے والے   زنگےزور کوریڈور کی بھرپور حمایت کرتے ہیں اور امید کرتے ہیں کہ اس راہداری کو جلد از جلد کھول دیا جائے گا۔



متعللقہ خبریں