روس اور یوکرین کے ساتھ ہم نے متوازن پالیسی اختیار کر رکھی ہے: صدر ایردوان

صدر ایردوان نے 19 مئی کو اتاترک، یوتھ اینڈ سپورٹس ڈے کی یادگاری تقریب کے موقع پر صدارتی نیشنل لائبریری میں منعقدہ "لائبریری ٹاکس" کے دائرہ کار میں  مختلف شہروں کے نوجوانوں سے ملاقات کی ہے

1829418
روس اور یوکرین کے ساتھ ہم نے متوازن پالیسی اختیار کر رکھی ہے: صدر ایردوان

صدر رجب طیب  ایردوان  نے کہا ہے کہ "ہم روس اور یوکرین دونوں کے حوالے سے توازن کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔

صدر ایردوان نے 19 مئی کو اتاترک، یوتھ اینڈ سپورٹس ڈے کی یادگاری تقریب کے موقع پر صدارتی نیشنل لائبریری میں منعقدہ "لائبریری ٹاکس" کے دائرہ کار میں  مختلف شہروں کے نوجوانوں سے ملاقات کی ہے۔

اس موقع پر صدر ایردوان نے کہا کہ  "روس یوکرین جنگ کے دوران ہمارا اصولی  اور غیر جانبدارانہ رویہ تھا۔ کیا اس رویہ کے نتیجے میں کوئی دباؤ تھا، خاص طور پر روس اور مغرب کی طرف سے؟ اگر ایسا ہے تو ترکی نے اس سے کیسے نمٹا؟"  کے سوال کا جواب دیتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ "ہم روس اور یوکرین دونوں کے حوالے سے توازن کی پالیسی پر گامزن ہیں۔ اس پالیسی میں، میرا (روسی صدر ولادیمیر) پوتن یا (یوکرین کے صدر ولادیمیر) زیلنسکی سے تعلقات منقطع کرنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے۔ میں دونوں صدور کے ساتھ اپنی ٹیلی فون ڈپلومیسی جاری  رکھے ہوئے ہوں۔ صدر پوتن اور صدر  زیلنسکی کے پاس میں نے   اپنا خصوصی نمائندہ بھیجا ہےاور اس ڈپلومیسی کو جاری رکھنے کے لیے آئندہ بھی بھیجتا رہوں گا۔

صدر ایردوان نے کہا کہ نئی عالمی جنگ شروع ہونے سے خطے یا دنیا کو کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔



متعللقہ خبریں