پوتن اور زیلسنکی سے نیٹو سمٹ کے حوالے سے عنقریب جائزاتی بات چیت ہو گی، ترک صدر

سربراہی اجلاس میں ہمیں روس یوکرین جنگ میں ہونے والی پیش رفت اور اس کے اثرات کا اپنے اتحادیوں کے ہمراہ بغور جائزہ لینے کا موقع ملا ہے، رجب طیب ایردوان

1801934
پوتن اور زیلسنکی سے نیٹو سمٹ کے حوالے سے عنقریب جائزاتی بات چیت ہو گی، ترک صدر

صدر رجب طیب ایردوان کا کہنا ہے کہ وہ  روسی صدر ولا دیمر پوتن اور یوکیرینی  صدرِ مملکت ولا دیمر زیلنسکی  کے ساتھ کل کے نیٹو اجلاس کا جائزہ لیں  گے۔

صدر ایردوان نے نیٹو کے  غیر معمولی  حکومتی و مملکتی سربراہان کے اجلاس کی وساطت سے   دورہ بیلجیم سے وطن واپسی پر   طیارے میں  اخباری نمائندوں کو بریفنگ دی۔

اس بات کا اظہار کرتے ہوئے کہ وہ نیٹو کے اتحادیوں کے طور پر ایک ایسے وقت میں اکٹھے ہوئے ہیں جب عالمی سلامتی کے تصور میں نمایاں تبدیلیاں رونما ہو رہی ہیں، ایردوان نے بتایا کہ سربراہی اجلاس میں انہیں روس یوکرین جنگ میں ہونے والی پیش رفت اور اس کے اثرات کا اپنے اتحادیوں کے ہمراہ بغور جائزہ لینے کا موقع ملا۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم نے  اجلاس میں   روس اور یوکیرین کے درمیان فائر بندی اور امن کے قیام سے  متعلق ہماری   وسیع پیمانے کی سفارتی کوششوں  کے بارے میں ہمارے    اتحادیوں کوآگاہی کرائی  ہے، یہ  اجلاس ہر لحاظ سے  کافی  کامیاب اور  فائد مند گزرا ہے۔

صدر نے کہا کہ نیٹو اتحادیوں میں ترکی کی غیر معمولی پوزیشن اور خطے میں اس کے اہم کردار کوموجودہ حالات میں زیادہ  بہتر طریقے سے سمجھا گیا ہے، "علاقائی سلامتی کو یقینی بنانے کے لیے ترکی ایک ناگزیر اتحادی ہے۔"

یہ بتاتے ہوئے کہ ترکی نے شروع سے ہی جنگ کے خاتمے کے لیے بھرپور کوششیں کی ہیں جناب  ایردوان نے کہا کہ وہ اس سمت میں اپنی   جدوجہد جاری رکھیں گے۔

اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ وہ پوتن اور زیلنسکی کے ساتھ مسلسل فون پر  رابطے میں ہیں، ایردوان نے کہا "آج میں زیلنسکی سے  بات چیت کروں گا، جبکہ پوتن کے ساتھ ہفتے کے آخر میں یا ہفتے کے شروع میں ملاقات ہو سکتی ہے۔ اس دوران  ہم نیٹو میں ہونے والے مذاکرات کا جائزہ لیں گے۔



متعللقہ خبریں