صدارتی ترجمان ابراہیم قالن نے امریکہ کے قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان کے ساتھ ٹیلی فوننک بات چیت

و طرفہ تعلقات، F-35/F-16 مسئلہ، عالمی موسمیاتی تبدیلی، افغانستان، شام، لیبیا، نگورنو کاراباخ، یونان، مشرقی بحیرہ روم اور دیگر علاقائی پیش رفت پر تبادلہ خیال

1725850
صدارتی ترجمان ابراہیم قالن نے امریکہ کے قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان کے ساتھ ٹیلی فوننک بات چیت

صدارتی ترجمان ابراہیم قالن نے امریکہ کے قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان کے ساتھ ٹیلی فون پر بات چیت کی۔

ایوان صدر کے ترجمان کے تحریری بیان کے مطابق دو طرفہ تعلقات، F-35/F-16 مسئلہ، عالمی موسمیاتی تبدیلی، افغانستان، شام، لیبیا، نگورنو کاراباخ، یونان، مشرقی بحیرہ روم اور دیگر علاقائی پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ملاقات کے دوران صدر رجب طیب ایردوان اور امریکی صدر جو بائیڈن کے درمیان گلاسگو موسمیاتی سربراہی اجلاس کے دائرہ کار میں  ہونے والی دو طرفہ ملاقات کے موضوعات اور تفصیلات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ملاقات میں جہاں ترکی امریکہ تعلقات کی تزویراتی اہمیت پر زور دیا گیا وہیں اس بات پر زور دیا گیا کہ فریقین کو باہمی احترام، افہام و تفہیم اور مشترکہ مفادات اور بین الاقوامی معاہدوں کی پاسداری کی اہمیت کے دائرے میں رہ کر معاملات سے نمٹنا چاہیے۔

اس میں کہا گیا کہ ترکی افغانستان میں پیدا ہونے والے انسانی بحران کو روکنے اور مستحکم ماحول کو یقینی بنانے کے لیے افغانستان کے عوام کی مدد اور عالمی برادری کے ساتھ تعاون جاری رکھے گا۔

بالائی کاراباخ کی قبضے سے آزادی کے بعد قفقاز میں امن، استحکام اور ترقی کے لیے مشترکہ اقدامات پر زور دیا گیا۔

بات چیت میں اس بات پر زور دیا گیا کہ ترکی کی تمام دہشت گرد تنظیموں بشمول PYD/YPG/PKK اور داعش کے خلاف پرعزم جدوجہد جاری رہے گی جو شام کی سرحدی سلامتی اور ارضی سالمیت کے لیے خطرہ ہیں، اور یہ کہ ترکی اور امریکہ نیٹو کے اتحادی، موسمیاتی تبدیلی، دہشت گردی، نقل مکانی اور نقل مکانی کے لیے پرعزم ہیں۔اس بات پر اتفاق کیا گیا کہ ترکی کو عالمی اور علاقائی خطرات جیسے وبائی امراض اور وبائی امراض کا سامنا کرنے کے لیے تعاون اور یکجہتی کے ساتھ کام کرنا چاہیے۔



متعللقہ خبریں