ترکی: یورپی یونین قبرص کے معاملے میں حقائق سے بے بہرہ ہے

یورپی یونین جنوبی قبرصی یونانی انتظامیہ اور یونان کی وکالت کے علاوہ اور کچھ نہیں کر رہی۔ یورپی یونین کا مسئلہ قبرص کے حل میں کوئی مثبت کردار ادا کر سکنا نا ممکن ہے: تانجو بلگچ

1678114
ترکی: یورپی یونین قبرص کے معاملے میں حقائق سے بے بہرہ ہے

ترکی نے کہا ہے کہ یورپی یونین قبرص کے معاملے میں حقائق سے بے بہرہ ہے۔

ترکی وزارت خارجہ کے ترجمان تانجو بِلگچ  نے صدر رجب طب ایردوان کے دورہ شمالی قبرصی ترک جمہوریہ  کے بعد یورپی یونین کے کمشنر برائے خارجہ تعلقات و سلامتی پالیسی اور یورپی یونین کمیشن کے نائب صدر جوزف بوریل کے جاری کردہ بیان کا جواب دیا ہے۔

تانجو بلگچ نے کہا ہے کہ "یہ بیان یورپی یونین کے قبرص کے معاملے میں حقائق  سے کس قدر بے بہرہ ہونے کا ایک نیا ثبوت ہے"۔

انہوں نے ماراش کے بارے میں بوریل کے بیان سے متعلق سوال کا جواب دیا۔

انہوں نے کہا ہے کہ یہ بیان صرف یورپی یونین اتحاد کے  نام پر  جاری کیا گیا ہے اور ہمارے لئے کوئی تحّکم نہیں رکھتا۔ یورپی یونین نہ صرف شمالی قبرصی ترک جمہوریہ کے بارے میں حقائق سے بے بہرہ ہے بلکہ ویٹو حق  کو غلط استعمال کرنے والی جنوبی قبرصی یونانی انتظامیہ اور یونان  کی ترجمانی اور وکالت کے علاوہ اور کچھ نہیں کر رہی۔ اس طرز عمل کے ساتھ یورپی یونین کا مسئلہ قبرص کے حل میں کوئی مثبت کردار ادا کر سکنا نا ممکن ہے۔

بلگچ نے کہا ہے کہ شمالی قبرصی ترک جمہوریہ نے ماراش کو دوبارہ کھولنے کا جو فیصلہ کیا ہے اس کے ساتھ ترکی مکمل تعاون  کرتا ہے۔ یہ فیصلہ ماراش میں املاک کے مالکان کے حق کا بھی تحفظ کرتا ہے اور جیسا کی صدر رجب طیب ایردوان نے بھی کہا ہے کہ یہ فیصلہ سابقہ حق تلفیوں کی تلافی کرے گا اور مزید حق تلفیاں نہیں ہونے دے گا۔

وزارت خارجہ کے ترجمان تانجو بلگچ نے بیان میں یورپی یونین کو قبرص کے معاملے میں حقائق کا ادراک کرنے اور قبرصی ترکوں اور ان کے حقوق کی نفی کرنے سے پرہیز کرنے کی بھی دعوت دی ہے۔



متعللقہ خبریں