ترکی نے قومی ٹیکنالوجی ترقی کی بدولت دہشت گرد تنظیموں کو بے بس کر دیا ہے، اسپیکرِ اسمبلی

ہمارے اتحادیوں نے پی کے کے کی شام میں شاخوں پی وائے ڈی۔ وائے پی جی دہشت گرد تنظیموں سے تعاون کیا ہے جو کہ دوہرے معیار کا مظاہرہ کیا یے

1663347
ترکی نے قومی ٹیکنالوجی ترقی کی بدولت دہشت گرد تنظیموں کو بے بس کر دیا ہے، اسپیکرِ اسمبلی

ترک گرینڈ  نیشنل اسمبلی  کے اسپیکر مصطفی شین توپ   کا کہنا ہے کہ ترکی نے جدید ٹیکنالوجی جی بدولت   دہشت گردی کے خلاف جنگ کو ایک اچھی سطح تک پہنچایا ہے۔

انطالیہ میں منعقدہ جنوب مشرقی یورپی سلسلہ  تعاون پارلیمانی اسمبلی  کے8ویں جنرل کمیٹی اجلاس میں شرکت کرنے والے شین توپ  نے انادولو خبر ایجنسی کو بیان دیا ہے کہ  ماضی میں مقامی اور انفرادی کاروائیوں پر محیط دہشت گرد کاروائیوں نے   دنیا بھر میں ٹیکنالوجی کے فروغ کے  ساتھ کہیں زیادہ  ایک بڑے  مسئلے کی ماہیت اختیار کر لی ہے۔

ٹیکنالوجی امکانات کو عالمی دہشت گرد تنظیموں کو کسی  طریقے سے دینے والے ممالک کے باعث ان تنظیموں کے کہیں زیادہ مؤثر طریقے سے اپنی کاروائیاں کرنے کا ذکر کرنے والے شین توپ نے کہا کہ ’’یہاں پر یہ چیز اہم ہے کہ دہشت گرد تنظیموں  کے معاملے میں تفریق بازی نہ کی جائے۔  بعض مغربی ممالک نے خاصکر اپنے مفادات  کے لیے  بار آور ثابت ہو سکنے اور  ان کو نقصان نہ پہنچانے کی سوچ ہونے والی دہشت گرد تنظیموں کے  خلاف کسی  قسم کا کوئی مؤقف اختیار نہیں کیا ، گاہے بگاہے ان کی کرتوتوں پر آنکھیں بند رکھنے اور حتی ان سے تعاون کرنے کا  بھی مشاہدہ ہوا ہے۔ ہمارے اتحادیوں نے پی کے کے کی شام میں شاخوں پی وائے ڈی۔ وائے پی جی دہشت گرد تنظیموں سے تعاون کیا ہے جو کہ دوہرے معیار کا مظاہرہ  کیا ہے۔ ‘‘

انسداد ِ دہشت گردی  میں حالیہ  چند برسوں میں حاصل کردہ کامیابیوں کا اشارہ دینے والے  شین توپ  نے کہا کہ ’’ٹیکنالوجی  کی ترقی  اور بالخصوص ترکی کے ڈراؤنز اور مسلح ڈراؤنز  کے ذریعے حاصل کردہ  کامیابیوں نے  دہشت گرد تنظیموں  کو سخت حزیمت سے دو چار کیا ہے۔  اب ہم نے  کسی دوسے ملک کی مدد کے بغیر ہی  قومی امکانات کے ساتھ   دہشت گرد تنظیموں کا جینا محال کر رکھا ہے۔

 



متعللقہ خبریں