کورونا کے خلاف جدوجہد میں ترکی نے 157 ممالک اور 12 بین الاقوامی تنظیموں کی مدد کی ہے: چاوش اولو

ڈی۔ایٹ ممالک  ایک بہت بڑی اقتصادی صلاحیت کے مالک ہیں اور اس صلاحیت کو سامنے لانا  مکمل طور پر ان کی اپنی کوششوں پر منحصر ہے: وزیر خارجہ میولود چاوش اولو

1616715
کورونا کے خلاف جدوجہد میں ترکی نے 157 ممالک اور 12 بین الاقوامی تنظیموں کی مدد کی ہے: چاوش اولو

ترکی کے وزیر خارجہ میولود چاوش اولو نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کے خلاف جدوجہد میں ترکی نے 157 ممالک اور 12 بین الاقوامی تنظیموں کی مدد کی ہے۔

چاوش اولو نے بنگلہ دیش کی میزبانی میں ڈی۔ایٹ  10 ویں سربراہی اجلاس  کے دائرہ کار میں آن لائن منعقدہ ڈی ۔ایٹ وزرائے خارجہ اجلاس  میں افتتاحی خطاب کیا۔

خطاب میں انہوں نے کہا ہے کہ کووِڈ۔19 کے دور میں ہم نے ایک دفعہ پھر کثیر الفریقیت اور باہمی تعاون کی اہمیت کا مشاہدہ کیا ہے۔ بحیثیت ترکی ہم نے کووِڈ۔19 کے آغاز سے ہی باہمی اتحاد و تعاون  کی اہمیت پر زور دیا۔ اس دورانیے میں ہم نے 157 ممالک اور 12 بین الاقوامی تنظیموں کو امداد فراہم کی۔یہی نہیں بلکہ ہم نے، عالمی مالیاتی فنڈ، عالمی بینک اور جی۔20 میں، پسماندہ ترین ممالک  کے قرضہ جات کی ادائیگی میں التوا  سے متعلقہ کاروائیوں میں تعاون کیا۔

چاوش اولو نے کہا ہے کہ ڈی۔ایٹ ممالک  ایک بہت بڑی اقتصادی صلاحیت کے مالک ہیں اور اس صلاحیت کو سامنے لانا  مکمل طور پر ان کی اپنی کوششوں پر منحصر ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ سربراہی اجلاس میں منظوری کے منتظر 10 سالہ روڈ میپ اور ڈھاکہ میمورینڈم کی دستاویزات اس تنظیم کو ایک نئی رفتار عطا کریں گی۔

ڈی۔ایٹ ترجیحی تجارتی سمجھوتے 'D-8PTA 'نے ، ڈی ۔ایٹ داخلہ تجارت  اور اقتصادی تعاون کی بنیاد رکھی ہے ۔ میں تنظیم کے تمام اراکین کو اس سمجھوتے پر عملدرآمد کی دعوت دیتا ہوں۔

ٹوئرازم کے وباء سے سب سے زیادہ متاثرہ سیکٹر ہونے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے چاوش اولو نے کہا ہے کہ ترکی کی حیثیت سے ہم نے محفوظ سیاحتی پیکیج متعارف کروایا ہے اور اقوام متحدہ  کی عالمی سیاحتی تنظیم کے اصولوں سے ہم آہنگ شکل میں اپنے سیاحتی مقامات کو دوبارہ سے سیاحت کے لئے کھول دیا ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ ہم ڈی۔ایٹ ممالک کوسیاحت کے شعبے میں ترکی کی بہترین عملی مثالوں اور تجربات سے مستفید کر سکتے ہیں۔

وزیر خارجہ میولود چاوش اولو نے کہا ہے کہ کل کے سربراہی اجلاس میں ہم ٹرم چئیر مین شپ بنگلہ دیش کے حوالے کریں گے۔ ہمیں امید ہے کہ بنگلہ دیش ترکی کے اقدامات کو مزید آگے لے کر جائے گا۔ ہم اس معاملے میں ہر طرح کی مدد کے لئے تیار ہیں۔


ٹیگز: #ڈی۔ایٹ

متعللقہ خبریں