ترکی نے روہینگیا مہاجرین کے لئے ہسپتال کی تعمیرِ نو شروع کر دی

ترکی نے، بنگلہ دیش میں روہینگیا مہاجر کیمپ میں آتشزدگی سے متاثرہ، فیلڈ ہسپتال کی دوبارہ تعمیر شروع کر دی

1612999
ترکی نے روہینگیا مہاجرین کے لئے ہسپتال کی تعمیرِ نو شروع کر دی

ترکی نے، بنگلہ دیش میں روہینگیا مہاجر کیمپ میں آتشزدگی سے متاثرہ فیلڈ ہسپتال کی دوبارہ تعمیر شروع کر دی ہے۔

ترکی وزارت صحت، محکمہ آفات و ہنگامی حالات AFAD اور وزارت ماحولیات و شہری منصوبہ بندی کے ہاوسنگ اسیکم ادارے TOKİسے 26 افراد پر مشتمل ٹیم بنگلہ دیش میں فیلڈ ہسپتال کی دوبارہ تعمیر کر رہی ہے۔

AFAD کے شعبہ خارجہ تعلقات  و انسانی امداد کے نائب سربراہ 'صالح آلتن آئی ' نے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ آگ میں فیلڈ ہسپتال  اور تقریباً ایک ہزار 400 بامبو ہٹ ناقابل استعمال حالت میں آگئے ہیں۔ ہم نے ہسپتال کی دوبارہ تعمیر شروع کر دی ہے۔

صالح نے کہا ہے کہ ہسپتال، 1 ہزار 400مربع میٹر کی بند عمارت اور  4 ہزار مربع میٹر  کے کھُلے علاقے  کے ساتھ خدمات سرانجام دے گا۔ اس کے علاوہ ہم، قیام  کے حوالے سے متاثرہ جگہوں کی تعمیر  بھی فوری طور  شروع کر رہے ہیں۔

صالح آلتان  آئی نے کہا ہے کہ کتوپا لونگ علاقے میں 8 لاکھ مہاجرین  پناہ لئے ہوئے ہیں اور 24 کیمپوں میں نہایت مشکل حالات میں زندگی گزار رہے ہیں۔ ہم نے میانمار میں روہینگیا مسلمانوں کے لئے شروع کی گئی امدادی کاروائیوں کو 2017 سے بنگلہ دیش کی طرف منتقل کر دیا ہے۔

ترکی کے روہینگیا مہاجرین کے لئے 4 ہزار 620 بامبو ہٹ  اور مکمل طور پر طبّی سامان سے لیس فیلڈ ہسپتال تعمیر کرنے کی یاد دہانی کرواتے ہوئے انہوں نے کہا ہے کہ آتشزدگی سے قبل یہ ہسپتال یومیہ 1000 مریضوں کو علاج معالجے کی سہولیات فراہم کر رہا تھا۔

واضح رہے کہ کیمپ میں 23 مارچ کو لگنے والی آگ کے نتیجے میں 28 افراد ہلاک اور کم از کم 40 زخمی ہو گئے تھے۔ 10 ہزار پناہ گاہیں جل کر راکھ ہو گئی تھیں اور اس تباہی سے 55 ہزار مہاجرین متاثر ہوئے تھے۔



متعللقہ خبریں