یورپی یونین ترک شہریوں کو ویزے کی بندش سے مبرا قرار دینے کے وعدے کو پورا کرے، ترک وزیر خارجہ

ویزے کی بندش کا خاتمہ ایک کٹھن لیکن عملی جامہ پہنائے جانے کاتقاضا ہونے والا ایک عندیہ ہے

1569524
یورپی یونین ترک شہریوں کو ویزے کی بندش سے مبرا قرار دینے کے وعدے کو پورا کرے، ترک وزیر خارجہ

وزیر ِ خارجہ میولود چاوش اولو کا کہنا ہے  کہ یورپی یونین  کی جانب سے ترک شہریوں کو ویزے کی بندش سے مبرا رکھنے کے فیصلے پر عمل  درآمد  کے وعدے کو پورا کیا جانا چاہیے۔

چاوش اولو نے دوران ہفتہ برسلز میں اپنی مصروفیات کے بار ے میں پریس بریفنگ دی۔

ترک وزیر نے یورپی یونین خارجہ تعلقات و سلامتی پالیسیوں کے نمائندہ اعلی جوزف بوریل اور یورپی یونین کمیشن کے بعض ارکان سے ملاقات کی۔

اس دورے کے دوسرے روز  جناب چاوش اولو نے یورپی پارلیمان کے  ترکی امور کے رپورٹر  ناچو سانچیز آمور، یورپی یونین کونسل کے صدر چارلس مشل اور نیٹو کے سیکرٹری جنرل ینز اسٹولٹن برگ سے ملاقات کی۔

برسلز  میں اپنے مذاکرات کا جائزہ پیش کرتے ہوئے چاوش اولو نے بتایا کہ یورپی یونین  کی جانب سے ماہ دسمبر کے سربراہی اجلاس میں ہماری جانب مثبت ہاتھ بڑھایا گیا، اصلاحات مثبت ماحول میں خدمات فراہم  کریں گی۔ ویزے کی بندش کا خاتمہ ایک کٹھن لیکن عملی جامہ پہنائے جانے کاتقاضا ہونے والا ایک عندیہ ہے۔

کسٹم یونین مطابقت   کی تجدید لازمی ہونے پر زور دینے والے ترک وزیر نے بتایا کہ ہمارے اعتبار سے پہلا معاملہ  مغربی ممالک  کی  جانب سے علیحدگی پسند دہشت گرد تنظیم PKK  سے تعاون کو ختم کیا جانا ہے۔

انہوں نے روس سے خریدے گئے اور ترکی و امریکہ کے مابین کشیدگی کا موجب بننے والے فضائی دفاعی نظام ایس۔400  کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ نیٹو کی چھت تلے کمیشن کے قیام  پر مبنی ہماری تجویز تا حال برقرار  ہونے کی ہم نے یاد دہانی کرائی ہے۔ نیٹو کے سیکرٹری جنرل ینز اسٹولٹن برگ امریکہ کی منظوری کی صورت میں اس تجویز کو مثبت پانے کا اظہار کیا ہے۔

مشرقی بحیرہ روم میں قدرتی وسائل کی تلاش کے معاملے کا بھی ذکر کرتے ہوئے وزیر خارجہ نے بتایا کہ ہم حق بجانب تقسیم کے حق میں ہیں۔  اس بنا پر عملی  نظریے کو اپنانا ہوگا، ہمیں قبرص کےد ونوں فریقین کو آمنے سامنے لانا چاہیے۔ اجلاس میں ان دونوں کی شرکت کو لازمی بنایا جائے، یا پھر ایک دوسرت فارمیٹ پر علیحدہ علیحدہ اجلاس بھی منعقد کیا جا سکتا ہے۔

 



متعللقہ خبریں