ترکی۔ یورپی یونین تعلقات کو مثبت ایجنڈے میں شامل کرنا لازمی ہے، صدارتی ترجمان

علاقائی مسائل کے حل کے لیے ڈائیلاگ اور تعاون   تمام تر طرفین کے مفاد  میں ہو گا

1531754
ترکی۔ یورپی یونین تعلقات کو مثبت ایجنڈے میں شامل کرنا لازمی ہے، صدارتی ترجمان

صدارتی ترجمان ابراہیم قالن کی یورپی یونین کے حکام سے بیلجین دارالحکومت برسلز میں ملاقات کے دوران ترکی۔ یورپی یونین تعلقات، بحیرہ روم، لیبیا ، شام اور قاراباغ کے معاملات پر غور کیا گیا۔

ابراہیم قالن نے  10 تا 11 دسمبر کو منعقد ہونے والے یورپی یونین سربراہی اجلاس سے قبل کل برسلز کا دورہ سر انجام دیا۔

قالن نے مذاکرات کے دائرہ کار میں یورپی یونین کونسل کے سربراہ چارلس مشل  کے خارجہ پالیسیوں کی مشیر اعلی مریم وان دن ہوئیل ، یورپی یونین کمیشن کے سربراہ ارسلا  وون در لیین کی کابینہ کے شیف بجورن سی برت  سے ملاقات کی۔

ترکی۔ یورپی یونین،  مشرقی بحیرہ روم، لیبیا، شام  اور قاراباغ کی طرح کے علاقائی مسائل  پر غور کیے جانے والے ان مذاکرات میں قالن نے کسٹم یونین کی تجدید،  نقل مکانی معاہدے، ویزے کی بندش کا خاتمہ اور سیاسی ڈائیلاگ  معاملات میں  ٹھوس اقدامات اٹھائے جانے کی ضرورت کا اعادہ کیا۔

قبرص میں منصفانہ و پائدار حل کے حصول کے لیے  نئے افکار کی ضرورت در پیش ہونے پر زو ردینے والے اور ترکی   کے یونان کے ساتھ مشاورتی مذاکرات کے لیے تیار ہونے کا ذکر کرنے والے قالن نے بتایا کہ ترکی امن و استحکام کے تحفظ کے لیے پائدار مؤقف پر عمل پیرا رہے گا۔

انہوں نے واضح کیا کہ ترکی۔ یورپی یونین تعلقات کی سٹریٹیجک اہمیت   میں بتدریج اضافہ  ہو رہا ہے ، لہذا ہمیں   باہمی تعلقات کو ایک نیا متحرک  پن دینے  والے، باہمی تعاون کے فروغ اور دو طرفہ اعتماد افروز تعلقات کو تقویت دینے والے  ٹھوس اقدامات کی ضرورت لا حق ہے۔

یورپی یونین  کو علاقائی معاملات میں اپنی ذمہ داریاں پوری کرنے کی ضرورت کے تقاضے کو بھی پیش کرنے والے ترجمان نے زور دیا کہ علاقائی مسائل کے حل کے لیے ڈائیلاگ اور تعاون   تمام تر طرفین کے مفاد  میں ہو گا۔

انہوں نے توجہ مبذول کراتے ہوئے کہا کہ دو طرفہ  اختلافات سے ترکی ۔ یورپی  یونین تعلقات  کو متاثر کرنے  اور انہیں یرغمال بنانے کی اجازت نہیں دی جانی چاہیے،  اور جلد از جلد ترکی۔ یورپی یونین تعلقات  کو کسی مثبت ایجنڈے   میں شامل کرنا اہمیت کا حامل ہے۔

 



متعللقہ خبریں