دہشت گردوں سے فائر بندی کی اپیل نہیں کی جاتی ان کے خلاف جنگ لڑی جاتی ہے: آلتن

یورپی یونین ابھی تک دہشت  گردی کے خلاف جنگ میں درست مقام پر نہیں ہے اور یہ نہایت افسوسناک امر ہے: فخر الدین آلتن

1408244
دہشت گردوں سے فائر بندی کی اپیل نہیں کی جاتی ان کے خلاف جنگ لڑی جاتی ہے: آلتن

ترکی نے علیحدگی پسند دہشت گرد تنظیم PKK/YPG کی طرف سے شام کے علاقے عفرین میں حملے کے بارے میں یورپی یونین کے بیان کے خلاف ردعمل کا اظہار کیا ہے۔

ترکی صدارتی دفتر شعبہ مواصلات کے سربراہ فخر الدین آلتن نے ٹویٹر سے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ "دہشت گرد تنظیم سے فائر بندی کی اپیل نہیں کی جاتی۔ دہشت گردی کی مذمت کی جاتی ہے اور دہشت گردوں سے جنگ لڑی جاتی ہے"۔

آلتن نے کہا ہے کہ " یونین کے جاری کردہ بیان کو دیکھتے ہوئے یہ کہنا پڑتا ہے کہ یورپی یونین ابھی تک دہشت  گردی کے خلاف جنگ میں درست مقام پر نہیں ہے اور یہ نہایت افسوسناک امر ہے۔ اسے قبول نہیں کیا جا سکتا۔ اس وقت تک ہماری تمام تر تنبیہات کے باوجود PKK/YPG کی حمایت کرنے، اسے مسلح کرنے، قانونی حیثیت دینے کی کوششیں کرنے والے اور اپنے ممالک میں اسے دہشت گردانہ کاروائیوں کی اجازت دینے والے کل بروز منگل شام کے علاقے عفرین میں ہونے والے قتل عام کے سب سے بڑے ذمہ دار ہیں۔ اس حملے نے ثابت کر دیا ہے کہ دہشت گرد تنظیموں کو دئیے جانے والے نئے عنوانات نے ان کی وحشیانہ فطرت میں کوئی تبدیلی پیدا نہیں کی۔

آلتن نے کہا ہے کہ دہشت گردی نے شہریوں اور علاقے کے امن و استحکام کو نقصان پہنچایا ہے اور ناقابل تلافی تکلیف دہ نتائج کا سبب بنی ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ ہم اس غدارانہ حملے کے فاعلوں کے خلاف جدوجہد کریں گے اور ہمیں اس بات سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے کہ حملے میں ہلاک ہونے والے شہری کون ہیں اور حملہ کس کی طرف سے کیا گیا ہے۔ ہم ترکی ہیں۔ ہم نے دہشت گردی کی تمام شکلوں کے خلاف جدوجہد کی ہے اور کرنا جاری رکھیں گے۔ اس کے ساتھ ساتھ اس کھلے دہشت گردی کے حملے کے مقابل ابھی تک بات کو گھُما پھِرا کر کرنے میں مصروف اور دہشت گرد تنظیم PKK کے ساتھ گھناونے اتحاد بنانے والے غیر ملّی عناصر کو بھی ہم اپنی ملّت کے وجدان کے حوالے کرتے ہیں۔

واضح رہے کہ شام کے علاقے عفرین میں بم سے مسلح پیٹرول ٹینکر سے کئے گئے دہشت گردی کے حملے سے متعلق یورپی یونین کے شعبہ امور خارجہ کی طرف سے PKK/YPG کا ذکر کئے بغیر جاری کردہ بیان میں فائر بندی کی اپیل کا اعادہ کرنے کا ذکر کیا گیا اور کہا گیا ہے کہ " شام کے علاقے عفرین پر کئے گئے خوفناک دہشت گردانہ حملے کا کائی جواز نہیں ہو سکتا۔ حملے کے ذمہ داروں کو اس کا جواب دینا چاہیے"۔



متعللقہ خبریں