ہم، شام میں، کسی اور انسانی المیے کی اجازت نہیں دیں گے: چاوش اولو

ہم اپنے اتحادیوں سے ہمارے ساتھ مل کر کاروائی کرنے اور جارحیت کے سدباب کے لئے انتظامیہ اور اس کے حامیوں پر انتہائی دباو ڈالنے کی توقع رکھتے ہیں: وزیر خارجہ میولود چاوش اولو

1360214
ہم، شام میں، کسی اور انسانی المیے کی اجازت نہیں دیں گے: چاوش اولو

ترکی کے وزیر خارجہ میولود چاوش اولو نے کہا ہے کہ ہم، شام میں کسی اور انسانی المیے کی اجازت نہیں دیں گے۔

وزیر خارجہ میولود چاوش اولو 56 ویں میونخ سلامتی کانفرنس میں شرکت کے لئے میونخ کے دورے پر ہیں جہاں انہوں نے 27 سے 29 مارچ کو ترکی کے ضلع انطالیہ میں متوقع "انطالیہ ڈپلومیسی فورم " کے تعارفی پروگرام میں شرکت کی۔

تقریب سے خطاب میں ادلب میں بشار الاسد انتظامیہ کی طرف سے ترک فوجیوں پر حملوں کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا ہے کہ "ہم علاقے میں کسی اور قتل عام کی اجازت نہیں دیں گے۔ ہم اپنے اتحادیوں اور ساجھے داروں سے ہمارے ساتھ مل کر کاروائی کرنے اور جارحیت کے سدباب کے لئے انتظامیہ اور اس کے حامیوں پر انتہائی دباو ڈالنے کی توقع رکھتے ہیں۔ یہ ہمارے یورپی اتحادیوں کے لئے بھی ایک نزاعی امتحان ہے"۔

لیبیا کے مسئلے پر بھی بات کرتے ہوئے چاوش اولو نے کہا ہے کہ ملک کے مشرق میں موجود غیر مشروع مسلح فورسز کے لیڈر خلیفہ حفتر نے   بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ قومی مفاہمتی حکومت پر حملہ کیا ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ خلیفہ حفتر کو بعض سرفہرست یورپی ممالک کے ساتھ ساتھ مصر، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کی پشت پناہی حاصل ہے اور وہ تسلیم شدہ حکومت پر حملہ کر  کے خوش ہے۔

وزیر خارجہ میولود چاوش اولو نے کہا ہے کہ شام کے بعد یورپ  کو لیبیا میں بھی ناکام نہیں ہونا چاہیے اور بحران کو المیے میں تبدیل ہونے  کی اجازت نہیں دینا چاہیے۔



متعللقہ خبریں