ترکی اور پاکستان کی تعلیم و ثقافت کے شعبوں میں تعاون کو مزید فروغ دینے پر مطابقت

وفاقی وزیر تعلیم ، پیشہ ورانہ تربیت اور قومی ثقافتی ورثہ جناب شفقت محمود نے 5 رکنی وفد کی قیادت کرتے ہوئے آج انقرہ میں ترکی کے وزیر قومی تعلیم جناب ضیا   سلچوق سے ملاقات کی

ترکی اور پاکستان  کی تعلیم و ثقافت کے شعبوں میں  تعاون کو مزید فروغ دینے پر مطابقت

وفاقی وزیر تعلیم ، پیشہ ورانہ تربیت اور قومی ثقافتی ورثہ جناب شفقت محمود نے 5 رکنی وفد کی قیادت کرتے ہوئے آج انقرہ میں ترکی کے وزیر قومی تعلیم جناب ضیا   سلچوق سے ملاقات کی۔ دونوں وزراء نے تعلیم ، بالخصوص تکنیکی تعلیم اور پیشہ ورانہ تربیت میں پاک ترکی تعلقات کو مزید فروغ دینےکے اقدامات پر تبادلہ خیال کیا۔

پاکستان کے وفد کا خیرمقدم کرتے ہوئے وزیر ضیا سلچوق  نے کہا کہ پاکستان ترکی کے عوام کی نظر میں ایک خاص مقام رکھتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور ترکی نے پوری تاریخ میں ایک دوسرے کی حمایت کی ہے ، اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ وہ ترکی کی جنگ آزادی ، چناق قلعے کی جنگ اور 15 جولائی 2016 کو ناکام بغاوت کے دوران پاکستانی عوام کی طرف سے دی جانے والی حمایت کو فراموش نہیں کرے گا۔

انہوں نے پاک ترک اسکولوں کو ترکی کے معارف فاؤنڈیشن کے حوالے کرنے میں پاکستان حکومت کی کوششوں کو بھی سراہا۔ جناح ینگ رائٹرز کمپوزیشن  ایوارڈز ، پاکستان سفارتخانہ انقرہ اور ترکی کی وزارت قومی تعلیم کے مشترکہ منصوبے کا ذکر کرتے ہوئے ، وزیر ضیاء سلچوق  نے کہا کہ اس مقابلے نے پاکستان ترکی دوستی میں مزید اہم کردار ادا کیا ہے۔ انہوں نے تعلیمی تعلقات کو مزید بڑھانے کی خواہش کا اظہار کیا۔

وزیر شفقت محمود نے پُرجوش مہمان نوازی پر ترک میزبانوں کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ پاکستانی عوام ترکی کے عوام اور اس کے برعکس حقیقی محبت اور احترام رکھتے ہیں۔ انہوں نے خاص طور پر صدر رجب طیب ایردوان  کا کشمیری عوام کی مستقل حمایت پر شکریہ ادا کیا اور اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے حالیہ اجلاس میں ان کے جر ات مندانہ تقریر کی تعریف کی جس میں صدر ایردوان نے مقبوضہ کشمیر کے شکار عوام سے سخت یکجہتی کا اظہار کیا۔ جناب شفقت محمود نے ترک وزیر کو پاکستانی حکومت کے تعلیمی اصلاحات کے پروگرام کے بارے میں آگاہ کیا جس میں پاکستان کے پورے تعلیمی شعبے کے لئے یکساں نصاب شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی نوجوانوں کو معاشرے کی ضروریات اور ضروریات کے مطابق معیاری تعلیم فراہم کرنے کی کوششیں جاری ہیں۔

انہوں نے تکنیکی تعلیم اور پیشہ ورانہ تربیت کے لئے ہونے والے اقدامات کے بارے میں بھی ذکر کیا اور کہا کہ پاکستان ترکی کے تجربے سے سبق حاصل کرنے کا خواہاں ہے۔ وزیر شفقت محمود اور ان کے ہمراہ وفد نے محترمہ وجیہہ اکرم ، وزارت برائے وفاقی تعلیم و پیشہ ورانہ تربیت کے پارلیمانی سیکرٹری ، سید قومی جاوید حسن ، نیشنل ووکیشنل اینڈ ٹیکنیکل ٹریننگ کمیشن ، ڈاکٹر ناصر خان ، ایگزیکٹو ڈائریکٹر این اے وی ٹی ٹی سی اور دیگر سینئر افسران کا دورہ کیا۔ وزارت تعلیم کی مذہبی تعلیم کے ڈرایکٹریٹ جنرل  انہوں نے احمد تیویفق الیری امام حاتپ ہائی اسکول کا بھی دورہ کیا۔ وزیر شفقت محمود نے ریمارکس دیئے کہ پاکستان کے نصاب میں ترمیم کرتے ہوئے ، ہم مذہبی اور جدید تعلیم کے امتزاج ، امام  حطیب  ماڈل کے ترک تجربے سے سبق حاصل کرسکتے ہیں۔

وفد نے مصطفیٰ کمال اتاترک کے مقبرے پر بھی حاضری دی  اور  وزیر شفقت محمود نے اتاترک کی قبر پر پھولوں کی چادر چڑھائی۔



متعللقہ خبریں