ایس۔400 کے معاملے میں ترکی ہر گز پیچھے قدم نہیں ہٹائے گا، وزیر خارجہ

ہمارے خلاف اگر کوئی منفی قدم اٹھایا گیا تو ہم اس کا جواب دیں گے

ایس۔400 کے معاملے میں ترکی ہر گز پیچھے قدم نہیں ہٹائے گا، وزیر خارجہ

ترک وزیر خارجہ میولود چاوش اولو نے روس سے ایس۔چار سو دفاعی نظام کی خرید کے حوالے سے ترکی کے عزم  پر ایک بار پھر زور دیتے ہوئے کہا کہ "نتائج چاہے کچھ بھی کیوں نہ ہوں ہم کسی بھی صورت اس عمل سے پیچھے قدم نہیں ہٹائیں گے۔

جناب چاوش اولو نے انادولو  ایجنسی کے ایڈیٹر ڈیسک پر ایجنڈے کے حوالے سے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہ ترکی ایس۔ 400 دفاعی نظام  کی خرید کے معاملے کو نکتہ پذیر کر چکا ہے، اس کی ترکی کو ترسیل  کی مدت کے حوالے ضروری امور پر کام ہو رہا ہے، یہ نظام عنقریب ترکی میں نصب کر دیا جائیگا۔

انہوں نے کہا  کہ امریکہ چاہے جتنا بھی واہ ویلا کیوں نہ مچا لے  اس معاملے میں اس کی ایک نہیں چلے گی، ہم کسی ایک ملک کی جانب سے دوسرے ممالک پر خریدو یا نہ خریدو کی طرح کے مؤقف کو مسترد کرتے ہیں۔ اس کو اب اپنے اس لائحہ عمل سے باز آجانا چاہیے۔  ہمارے خلاف اگر کوئی منفی قدم اٹھایا گیا تو ہم اس کا جواب دیں گے۔

ترکی کے ایس۔400 کی خرید پر اٹل ہونے اور کسی بھی صورت پیچھے قدم نہ ہٹانے پر زور دیتے ہوئے جناب چاوش اولو کا کہنا تھا کہ چاہے کچھ بھی کیوں نہ ہو ہم اس عمل سے باز نہیں آئیں گے۔

شام کی تازہ صورتحال کا بھی ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سلسلہ آستانہ پر عمل پیرا ہونے میں ہی اچھائی ہے۔

ملکی انتظامیہ کے ضامن ممالک ایران اور روس ہونے کا ذکر کرنے والے چاوش اولو نے کہا کہ "ہم اسد انتظامیہ پر دباؤ ڈالنے سے قاصر ہیں جیسی معذرت ناقابل قبول ہو گی، ادلیب میں انتہا پسند گروہوں کو اسد انتظامیہ ہی بھیج رہی ہے۔

انہوں نے کل ادلیب  میں ترک چیک پوسٹ پر ہونے والے حملے کے بارے میں کہا کہ ہمارے خیال میں اس علاقے میں بمباری قصدی طور پر کی گئی ہے، ہم نے روس کو ضرور ی پیغام دے دیا ہے اگر دوبارہ ایسی حرکت ہوئی تو ہم اس کا لازمی جواب دیں گے۔



متعللقہ خبریں