ترکی کو ایف۔35 کی حوالگی کے بعد انقرہ کا دورہ کروں گا، قائمقام امریکی وزیرِ دفاع

پینٹاگون کے ترجمان چارلس سمرز کا کہنا ہے کہ سیکورٹی زون کے معاملے پر ترکی کے وسیع پیمانے کے مثبت مذاکرات جاری ہیں

ترکی کو ایف۔35 کی حوالگی کے بعد انقرہ کا دورہ کروں گا، قائمقام امریکی وزیرِ دفاع

 

امریکی قائمقام  وزیر دفاع  پیٹرک شانا ہان  کا کہنا ہے کہ وہ ترکی کو ایف۔35کی حوالگی  کے بعد دارالحکومت انقرہ کا دورہ کرنے کے خواہاں  ہیں۔

البانوی وزیر ِ دفاع اوتلا زاچکہ سے  پینٹاگون  میں یکجا ہونے والے شان ا ہان نے اخباری نمائندوں کے سوالات کا جواب دیا۔

امریکی ترک کونسل  کی سالانہ کانفرس کے دائرہ کار میں واشنگٹن کا دورہ  کرنے والے  ترک وزیر دفاع خلوصی عقار کے ساتھ اپنی ملاقات کا جائزہ پیش کرتے ہوئے شاناہان نے  بتایا کہ"ہمارا راستہ کہاں پر بند ہوا  ہے ، وہاں سے ہم کیسے نکلیں گے ؟" سوالات  کا جواب  تلاش  کیا جا رہا ہے، ہم  پوزیشنز سے ہٹ کر مفادات  پر مرکوز ہیں۔ "

انہوں نے یہ بھی کہا کہ دونوں ممالک کے باہمی تعلقات میں پیش رفت آئی ہے، ترکی ہمارا سٹریٹیجک شراکت دار ہے، ترک وزیر دفاع سے ملاقات کافی خوشگوار رہتی ہے، میں نے مشترکہ جنگی  طیارے ایف۔35 کی ترکی حوالگی کے بعد ان سے انقرہ میں ملاقات کا عندیہ دیا ہے۔

دریں اثناء شمالی شام میں سیکورٹی زون کے قیام  کا معاملہ بھی ایجنڈے میں برقرار ہے۔

پینٹاگون کے ترجمان چارلس سمرز کا کہنا ہے کہ سیکورٹی زون کے معاملے پر ترکی کے وسیع پیمانے کے مثبت مذاکرات جاری ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ امریکی فوجیوں کے انخلاء  کے وقت اپنے اتحادیوں کے ہمراہ شام میں داعش کے وجود کا مستقل طور پر  خاتمہ  کرنے اور خطے میں عدم استحکام پیدا کرنے والے طاقت کے خلاء کی راہ میں رکاوٹ کھڑی کرنے ، ترکی  کے جائز سیکورٹی  خدشات پر غور کرنے   اور داعش کے خلاف جنگ  میں ہمارے شراکت داروں  کا تحفظ کرنے سمیت صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے شام میں دیگر اہداف کے حصول پر ہمارا یقین پختہ ہے۔



متعللقہ خبریں