حلبجہ قتل عام نے انسانی وجدان کو جو گہرا گھاو لگایا وہ آج تک بھرنے میں نہیں آیا: ایردوان

حلبجہ قتل عام میں ہلاک ہونے والے کرد بھائیوں کے لئے میں اللہ سے رحمت کا طلبگار ہوں: صدر رجب طیب ایردوان

حلبجہ قتل عام نے انسانی وجدان کو جو گہرا گھاو لگایا وہ آج تک بھرنے میں نہیں آیا: ایردوان

ترکی کے صدر رجب طیب ایردوان نے عراق کے شہر حلبجہ کے قتل عام کی 31 ویں سالانہ یاد کے موقع پر خصوصی بیان جاری کیا ہے۔

ٹویٹر پیج سے جاری کردہ بیان میں صدر ایردوان نے کہا ہے کہ31 سال قبل حلبجہ میں کیمیائی حملے کے نتیجے میں  ہزاروں شہری ہلاک ہو گئے اور اس قتل عام نے انسانی وجدان کو جو گہرا گھاو لگایا  وہ آج تک بھرنے میں نہیں آیا۔

حلبجہ قتل عام کے انسانی تاریخ میں ایک سیاہ دھبہ ہونے پر زور دیتے ہوئے صدر رجب طیب ایردوان نے کہا کہ حلبجہ قتل عام میں ہلاک ہونے والے کرد بھائیوں کے لئے میں اللہ سے رحمت کا طلبگار ہوں۔

واضح رہے کہ حلبجہ قتل عام ایران ۔عراق جنگ کے دوران ہوا۔

اس دور میں عراق کے صدر صدام حسین نے حلبجہ میں کیمیائی اسلحے کے استعمال کا حکم دیا تھا۔

16 مارچ 1988 کو آٹھ طیاروں نے  زہریلی گیس  کے بم حلبجہ قصبے میں پھینکے۔

اس حملے کے نتیجے میں 5 ہزار سے زائد افراد ہلاک اور 7 ہزار سے زائد زخمی ہو گئے  ، ہلاک ہونے والوں میں زیادہ تر تعداد عام شہریوں کی تھی۔



متعللقہ خبریں