منبج اور دریائے فرات کے مشرقی علاقوں کا کنٹرول ترکی کے ہاتھ میں دیا جائے، صدارتی ترجمان

اس علاقے سے ترکی کے خلاف کسی قسم کے خطرےاور دہشت گرد حملوں کی ہم ہر گز اجازت نہیں دیں گے

1138655
منبج اور دریائے فرات کے مشرقی علاقوں کا کنٹرول ترکی کے ہاتھ میں دیا جائے، صدارتی ترجمان

"ترکی  کی شام کے علاقوں منبج اور دریائے فرات کے مشرقی کنارے کے حوالے سے بنیادی توقع علاقے  کا کنٹرول اس کے ہاتھ میں دیا جانا ہے۔ "

صدارتی ترجمان ابراہیم قالن نے انقرہ میں کابینہ کے اجلاس کے بعد اپنے بیان میں کہا ہے کہ"منبج اور دریائے فرات کے مشرقی کنارے کے علاقوں میں ادلیب کی طرح کے ماڈل  پر عمل درآمد کے لیے ہماری بنیادی توقع ان علاقوں کا کنٹرول ترکی کے حوالے کرنا ہے۔"

انہوں نے بتایا کہ اس علاقے سے ترکی کے خلاف کسی قسم کے خطرےاور دہشت گرد حملوں کی ہم ہر گز اجازت نہیں دیں گے۔

صدارتی ترجمان نے  ترکی اور متحدہ امریکہ کے درمیان طے پانے والے  منبج  روڈ میپ کے  حوالے سے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ"دو اتحادی مملکتوں کے طور پر روڈ میپ پر جلد از جلد عمل درآمد کو مزید تاخیری کے بغیر عملی جامہ پہنانا دو طرفہ تعلقات ، علاقائی سلامتی اور شام میں جاری سلسلہ حل کے اعتبار سے خاصی اہمیت کا حامل ہے۔"

انہوں نے بتایا کہ"سیکورٹی زون" کے معاملے پر سمجھوتہ طے پانے کی خبریں حقائق کی عکاسی نہیں کرتیں ، اس معاملے پر مذاکرات کا عمل جاری ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہمارے نزدیک اسد انتظامیہ اپنی سرکاری حیثیت کو کھو چکی ہے  اور یہ ملک کے مستقبل کا تعین کرنے کی اب اہل نہیں رہی ہے۔

 

 

 



متعللقہ خبریں