دہشت گردی کے خلاف جدوجہد میں ترکی یورپی یونین کا ایک اہم ساجھے دار ہے

غیر ملکی دہشت گردوں کے سرحدوں سے گزرنے کا سدباب کرنا رکن ممالک کے لئے بھی مفید ہو گا اس کے علاوہ ہر دو فریقین کے لئے مفید  بعض حفاظتی اقدامات اختیار کرنا بھی نہایت اہمیت کا حامل ہے۔ کرسچئین برگر

741972
دہشت گردی کے خلاف جدوجہد میں ترکی یورپی یونین کا ایک اہم ساجھے دار ہے

یورپی یونین کے ترکی وفد کے سربراہ کرسچئین برگر نے کہا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف جدوجہد میں ترکی یورپی یونین کا ایک اہم ساجھے دار ہے۔

کرسچئین برگر  نے ترکی اور یورپی یونین کے درمیان آئندہ مہینوں میں توانائی کے شعبوں میں متوقع اجلاس میں شرکت کے لئے ترکی  کے دورے کے دوران منعقدہ پریس کانفرنس میں انہوں نے دہشت گردی کے خلاف جدوجہد کے موضوع پر بات کی۔

دہشت گردی کے خلاف ترکی کے ساتھ اتحاد کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے برگر نے کہا کہ غیر ملکی دہشت گردوں کے سرحدوں سے گزرنے کا سدباب کرنا رکن ممالک کے لئے بھی مفید ہو گا اس کے علاوہ ہر دو فریقین کے لئے مفید  بعض حفاظتی اقدامات اختیار کرنا بھی نہایت اہمیت کا حامل ہے۔ اس مقصد کے تحت در حقیقت یورپی یونین اور ترکی کے درمیان منّظم شکل میں ڈائیلاگ جاری ہیں۔

انہوں نے کہا کہ متعلقہ وزارتوں سے حکام مذاکرات کر رہے ہیں نتیجتاً ہم کہہ سکتے ہیں کہ ہم قریبی تعاون کی حالت میں ہیں۔

برگر نے کہا کہ مہاجرین کے معاملے میں تعاون کے لئے 3 بلین یورو مالیت  کی امداد کے معاملے میں بھی اتفاق رائے طے پا گیا ہے اور یہ مالیت 2016 سے 2017 کے دورانیے میں فراہم کی جائے گی۔

برسلز میں ہر 3 ماہ میں ایک دفعہ اس مقصد کے تحت اجلاس کرنے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے برگر نے کہا کہ خاص طور پر شامی مہاجرین  کے لئے صحت  کی خدمات  کے دائرہ کار میں ایک ہفتہ قبل کلنک کھولے گئے ہیں۔

برگر نے کہا کہ وزارت تعلیم  کے ساتھ مل کر جاری کردہ منصوبوں کے دائرہ کار میں  مہاجرین کو تعلیم کی فراہمی کے لئے اسکول  کھولنے کا موضوع بھی زیر غور ہے۔

انہوں نے کہا کہ اسی طرح ترکی، عربی اور یورپی زبانوں میں شامی بچوں کو تعلیم دے سکنے کے لئے شامی اساتذہ کو بھی تربیتی کورس  دینے کا پروگرام  بنایا جا رہا ہے۔



متعللقہ خبریں