یورپی یونین کی رکنیت ہمارے لئے زندگی موت کا مسئلہ نہیں ہے: صدر ایردوان

ہمیں رکنیت کے لئے کوششیں کرتے 54 سال کا عرصہ گزر چکا ہے آپ ابھی تک ہمیں کیوں انتظار کروا رہے ہیں۔ یورپی یونین کے روّیے سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ ترکی کے خود پیچھے ہٹنے کی خواہش رکھتی ہے جبکہ ہم چاہتے ہیں کہ اس کا فیصلہ وہ کریں: صدر ایردوان

739030
یورپی یونین کی رکنیت ہمارے لئے زندگی موت کا مسئلہ نہیں ہے: صدر ایردوان

صدر رجب طیب ایردوان نے کہا ہے کہ یورپی یونین کا یہ جاننا ضروری ہے کہ ترکی کی رکنیت یونین کے لئے ناگزیر ہے۔

صدر ایردوان نے نیٹو سربراہی اجلاس میں شرکت کے لئے برسلز روانگی سے قبل انقرہ ایسن بوعا ائیر پورٹ پر اخباری نمائندوں کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ یورپی یونین کا بھی اپنی ذمہ داریوں کو پورا کرنا  ضروری ہے۔

صدر ایردوان نے کہا کہ ہم ان سے جو کہنا چاہتے ہیں وہ یہ کہ ہمیں رکنیت کے لئے کوششیں کرتے 54 سال کا عرصہ گزر چکا ہے آپ ابھی تک ہمیں کیوں انتظار کروا رہے ہیں۔ یورپی یونین کے روّیے سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ ترکی کے خود پیچھے ہٹنے کی خواہش رکھتی ہے جبکہ ہم چاہتے ہیں کہ اس کا فیصلہ وہ کریں۔

صدر ایردوان نے کہا کہ ہم مذاکرات میں یورپی یونین کمیشن کے سربراہ جین کلاڈ جنکر اور یورپی یونین کونسل کے سربراہ ڈونلڈ ٹسک کے ساتھ اس موضوع پر بات چیت کریں گے۔ ان کا یہ جاننا ضروری ہے کہ یورپی یونین ہمارے لئے زندگی موت کا مسئلہ نہیں ہے۔

دہشت گردی کے موضوع پر بھی بات کرتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ دہشت گردی اب کسی ایک ملک کا نہیں بلکہ پوری دنیا کا مسئلہ بن چکی ہے اور  گلوبل مسائل کو گلوبل سطح کے تعاون سے حل کرنے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ ابھی تک ہم "میرا دہشت گرد اس کا دہشت گرد "جیسے طرز عمل کا  مشاہدہ کر رہے  ہیں، دہشت گردی کے خاتمے کے لئے  اس طرز عمل کو تبدیل کیا جانا شرط ہے۔

صدر ایردوان نے کہا کہ یہ تمام خطرات خواہ قومی سطح پر ہوں خواہ بین الاقوامی سطح پر ہمارے تحفظ کے لئے بھی سنجیدہ سطح کا خطرہ تشکیل دے رہے ہیں اور ان تمام  خطرات پر قابو پانے کے لئے پُر عزم ، اصولی  اور ٹھوس طرزعمل اختیار کرنے کی ضرورت ہے۔

نیٹو اتحادیوں کے بھی باہمی اتحاد کی حالت میں ہونے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ حالیہ مہینوں میں سینٹ پیٹرز برگ، سٹاک ہوم ،پیرس اور مانچسٹر میں ہونے والے حملوں نے یہ واضح کر دیا ہے کہ دہشتگردی اب کوئی علاقائی مسئلہ نہیں رہی ۔

ترکی کے ضلع آدانا  کی انجیرلک ائیر بیس  سے جرمنی کے انخلاء کی خواہش کے بارے میں سوال کا جواب دیتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ اس بارے میں ہمیں کوئی اطلاع نہیں دی گئی لیکن اگر وہ جانا چاہتے ہیں تو یہ ہمارے لئے کوئی بڑا مسئلہ نہیں ہے۔



متعللقہ خبریں