پاکستان کی ترکی میں ڈیمو کریسی کی حمایت پوری دنیا کے لیے ایک مثال ہے: صدر ایردوان

صدر ایردوان کے ساتھ نوے منٹ جاری  رہنے والی ملاقات  بڑی دوستانہ اور خوشگوار ماحول میں  ہوئی۔ انہوں نے   پاکستان کی پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں  کی جانب سے ترکی میں  ڈیموکریسی  کے تحفظ کے لیے اتفاقِ رائے سے منظور کردہ  قرار دادوں  پر شکریہ ادا کیا

پاکستان کی ترکی میں ڈیمو کریسی کی حمایت پوری دنیا کے لیے ایک مثال ہے: صدر ایردوان

ترکی کے صدر رجب طیب ایردوان  نے  پاکستان کے پارلیمانی وفد کو شرفِ ملاقات بخشتے ہوئے کہا ہے کہ وہ بہت جلد حکومتِ پاکستان اور پاکستانی  عوام کا شکریہ  ادا کرنے کی غرض سے پاکستان کا دورہ کریں گے۔

آٹھ رکنی پارلمانی وفد کے سربراہ   مشاہد  حسین  نے کہا کہ وہ ترکی میں جمہوریت  ، قانون کی بالادستی اورآئین کی پاسداری  اور تحفظ کے لیے ترکی کے مکمل حمایت کرنے کی غرض سے ترکی تشریف لائے ہیں۔

صدر ایردوان کے ساتھ نوے منٹ جاری  رہنے والی ملاقات  بڑی دوستانہ اور خوشگوار ماحول میں  ہوئی۔ انہوں نے   پاکستان کی پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں  کی جانب سے ترکی میں  ڈیموکریسی  کے تحفظ کے لیے اتفاقِ رائے سے منظور کردہ  قرار دادوں  پر شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے پاکستان کے صدر ممنون حسین  اور وزیر اعظم   میاں محمد نواز شریف کی جانب سے  ترکی میں ڈیمو کریسی  کی حمایت  کے لیے کیے جانے والے  ٹیلی فون پر  شکریہ ادا کیا۔ 

انہوں نے   کوئٹہ  میں  دہشت گردی کے واقعے کی شدید مذمت کرتے ہوئے متاثرہ  خاندانوں        سے تعزیت کا اظہار  کرتےہوئے ترکی اور پاکستان میں جاری دہشت گرد ی پر قابو پانے کے لیے مشترکہ جدوو جہد  کی ضرورت پر زور دیا۔

صدر ایردوان  نے اس       موقع پر  کہا کہ پاکستانی وفد کا دورہ  ہمارے لیے بڑی اہمیت کا حامل ہے۔ 15 جولائی کی ناکام بغاوت    کے بعد پاکستان  نے جس طرح ترکی  میں ڈیمو کریسی کی حمایت کی ہے وہ  پوری دنیا کے لیے ایک مثال کی حیثیت رکھتی ہے۔  انہوں نے کہا کہ  پاکستانی عوام کے اس جذبے کی قدر کرتے ہوئے اور شکریے  کی   غرض سے وہ جلد ہی پاکستان کا دورہ کریں گے۔

اس موقع پر سینٹر مشاہد حسین   نے کہا کہ   ان کے وفد میں پاکستان کی آٹھ  سیاسی جماعتوں کے نمائندئے َ موجود ہیں  جو ترکی میں ڈیمو کریسی   کی پاسداری اور یک جہتی کا اظہار کرنے کی غرض سے  ترکی تشریف لائے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بغاوت  کو کچلنے  سے ترکی کی قیادت کے کس قدر جمہوریت پسند ہونے کی عکاسی ہوتی ہے۔  عوام بغاوت کو کچلنے   کے لیے  زندگی اور موت کی پرواہ  کیے بغیرسڑکوں پر نکل آئے   جس پر ترک عوام  کو اس  جمہوری جدو جہد پر مبارک باد پیش کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا ترکی اورپاکستان کے درمیان تعلقات کی اہمیت پو زور دیتے ہوءے کہا کہ یہ دونوں ممالک  پوری دنیا  میں مثالی  تعلقات رکھتے ہیں ۔ انہوں نے اس موقع پر   صدر ایردوان کو پاکستان کی پارلمینٹ کے دونوں ایوانوں  کی جانب سے منظور کی جانے والی قرار دادوں پر مشتمل  شیلڈ پیش کی۔

سینٹر طلحہ محمود نے   پاکستان کے تمام مکاتبِ فکر سے تعلق رکھنے والے  علما  ئے کرام  کے ترکی میں جمہوریت کی پاسداری  اور صدر ایردوان  کی حمایت میں  جاری  فتویٰ  پیش کیا۔

اس ملاقات میں  سینٹر   محمد جاوید عباسی، سینٹر سحر کامران،  ایم این اے منزہ  حسن،  سینٹر  محمد طلحہ، سینٹر منیر کبیر احمد محمد شاہی، سینٹر  ستارہ  ایاز اور سینٹر صاحبزادہ  طارق اللہ    بھی موجود تھے۔



متعللقہ خبریں