ترکی کی سلامتی کو خطرہ لاحق ہوا تو کاروائی ہو گی،داود اولو

وزیر اعظم احمد داؤد اولو نے کہا ہے کہ شام میں متوقع فائر بندی کے ان کی ملکی سلامتی کے لیے خطرہ تشکیل دینے کی صورت میں وہ اس کی پابندی نہیں کریں گے ۔

439282
ترکی کی سلامتی کو خطرہ لاحق ہوا تو کاروائی ہو گی،داود اولو

وزیر اعظم احمد داؤد اولو نے کہا ہے کہ شام میں متوقع فائر بندی کے ان کی ملکی سلامتی کے لیے خطرہ تشکیل دینے کی صورت میں وہ اس کی پابندی نہیں کریں گے ۔یہ فائر بندی شام کے اندر ایک دوسرے سے بر سر اقتدار طرفین کے لیے معتبر ہے ۔

انھوں نے قونیہ میں ایجنڈے سے متعلق صحافیوں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ ترکی کی علیحدگی پسند دہشت گرد تنظیم پی کے کے کی شام میں شاخ وائے پی جی داعش اور النصرا کیطرح ایک دہشت گرد تنظیم ہے ۔ امریکہ اور روس کیطرف سے شام میں کروائی گئی فائر بندی میں اس تنظیم کو دہشت گرد تنظیم قرار نہیں دیا گیا ہے لیکن اس حقیقت کو فراموش نہیں کرنا چاہئیے کہ اگر ترکی کی سلامتی کو کوئی خطرہ لاحق ہوا تو وہ کاروائی کے لیے کسی سے اجازت نہیں لے گا اور ضروری کاروائی کرئے گا کیونکہ اسوقت یہ مسئلہ شام کا نہیں بلکہ ترکی کا مسئلہ بن جائے گا ۔انھوں نے دہشت گردی کی حمایت کرنے والے ممالک کو سخت زبان میں خبردار کرتے ہوئے کہا کہ آپ یہ سوچ کرکہ ترکی خاموش رہے گا ترکی کے اندر دہشت گرد ی کی حمایت سے باز رہیں ۔ ترکی اپنی سلامتی کے بارے میں خود ہی فیصلہ کرنے کا مجاز ہے ۔ وائے پی جی اور اس کے حمایتی ممالک فائر بندی سے فائدہ اٹھانے کی کوشش مت کریں کیونکہ ترکی کا جواب منہ توڑ ہو گا ۔



متعللقہ خبریں