ترکیہ اور توانائی 22

ترکیہ میں قدرتی گیس کے ذخائر کی تلاش کی کارروائیاں

2144870
ترکیہ اور توانائی 22

جب ترکیہ بحیرہ اسود میں سسمک تحقیقات اور ہائیڈرو کاربن کا کھوج لگانے کی سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہے تو ایک اور اہم قدم اٹھایا گیا ہے۔ سکاریہ  قدرتی گیس فیلڈ میں گیوک تپے ۔ ٹو کنویں کے لیے فاتح ڈرلنگ جہاز نے کھدائی کا کام  شروع کر دیا ہے۔ رومانیہ-ترکیہ خصوصی اقتصادی زون کی سرحد کے قریب واقع علاقے  کا گیوک تپے ٹو بحیرہ اسود میں قدرتی گیس کی پیداوار کا 25 واں کنواں بن گیا ہے۔

ڈرلنگ کی تکمیل کے بعد، سکاریہ گیس فیلڈ میں ترکی کی یومیہ پیداوار 40 ملین کیوبک میٹر تک بڑھنے کی توقع ہے۔

اس کا مطلب ہے کہ بحیرہ اسود میں قدرتی گیس کے ذخائر بڑھ کر 710 بلین کیوبک میٹر  تک ہو جائیں گے۔

مذکورہ قدرتی گیس کی پیداوار میں اضافہ کرکے، یومیہ  60 ملین افراد کی قدرتی گیس کی ضرورت  کو پورا کرنے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔

تو، ترکیہ جو کئی برسوں سے بین الاقوامی پائپ لائنوں  کے ذریعے  آنے والی قدرتی گیس پر انحصار کرتا چلا آیا  ہے، اس  سطح تک  کیسے پہنچا؟ شعبہ  توانائی میں خود مختاری کا سنگ بنیاد کیسے ڈالا گیا؟

بحیرہ اسود کی قدرتی گیس کی تلاش کا کام اگست 2020 میں  ُتونا۔ون کنوئیں میں شروع ہوا۔ اس کنویں  میں 320 بلین کیوبک میٹر گیس دریافت ہوئی۔ اضافی تحقیقات کے بعد یہ حقیقت آشکار ہوئی  کہ تُونا ون فیلڈ میں قدرتی گیس کے ذخائر 405 بلین کیوبک میٹر  ہیں۔

بعدازاں  آماسرہ -1 ریجن میں کھوج لگانے کی سرگرمیاں جاری رہیں۔ فاتح ڈرلنگ جہاز نے 4 جون 2021 کو 135 بلین کیوبک میٹر  کے  ایک نئے ذخیرے کی  دریافت کی۔

جس سے مجموعی  ذخائر بڑھتے ہوئے 540بلین کیوبک میٹر ہو گئے۔  اوپر تلے  دریافتوں کے بعد، ترکیہ نے  ان تمام کنووں کے موجود ہونے والے سکاریہ گیس فیلڈ میں ایک بین الاقوامی ماہر کمپنی کو تھری ڈی سکیننگ کرنے کا کام سونپا۔ ابتدائی تعین کے مطابق خطے میں ُکل ذخائر 652 بلین کیوبک میٹر ہیں۔

2023 کے آخری ایام  میں چائے جمعہ ون کنوئیں میں کھدائی کی گئی۔ جہاں  پر  58 بلین کیوبک میٹر قدرتی گیس  کے  ذخائر دریافت ہوئے۔ اس طرح ترکیہ کے  مجموعی ذخائر  بڑھ کر 710 بلین کیوبک میٹر تک  ہو گئے۔

ایک جانب کھدائی کی سرگرمیاں جاری  ہونے کے وقت اس  گیس کو سطح زمین تک  پہنچانے کی بھرپور کوششیں کی گئیں۔ زمینی  تنصیبات کی تعمیر جنوری 2021 میں شروع ہوئی۔

قدرتی گیس کو  سطح زمین تک لانےو الی پہلی پائپ لائن  کی تعمیر کا کام  2022 میں شروع ہوا۔ جون 2022 میں شروع ہونے والا پائپ بچھانے کا کام ایک قلیل مدت میں مکمل ہو گیا۔

21 اپریل 2023 کو صدر ایردوان نے قدرتی گیس کی پہلی مشعل روشن کی اور بحیرہ اسود قدرتی گیس کی موجودہ نیٹ ورک کے ذریعے ترسیل شروع ہو گئی۔

قدرتی گیس کی دریافت سے لے کر ڈرلنگ تک، پائپ لائن کی تعمیر سے لے کر   تقسیم کی تنصیبات کی 32 ماہ  میں  تکمیل ہوئی۔

تاہم، دستیاب اعداد و شمار کی روشنی میں، بحیرہ اسود میں صرف قدرتی گیس کا کھوج نہیں لگایا جا رہا۔ خاص طور پر مغربی بحیرہ اسود کے علاقے میں تیل کے آثار بھی پائے گئے ہیں ۔ توقع ہے کہ آنے والے دنوں میں اس خطے میں ایک ڈرلنگ آپریشن کیا جائے گا۔

زیر زمین وسائل میں نئی ​​دریافتوں کے ذریعے توانائی پر غیر ملکی انحصار کو کم کرنے کا ہدف مقرر کیا  گیاہے۔ ترکیہ کے قدرتی گیس کے نظام میں داخل ہونے والی کل مقدار  2023 میں پچھلے سال کے مقابلے میں 8 فیصد کم ہو کر 51 بلین 477 ملین 2 لاکھ 97  ہزار مکعب میٹر تک پہنچ گئی۔ دوسری جانب ہر سال درآمدات مزید گراوٹ لانے کی  منصوبہ بندی کی جا رہی ہے۔

ترکیہ اپنی قدرتی گیس کی زیادہ تر ضرورت کو 7 بین الاقوامی قدرتی گیس پائپ لائنوں، 4 ایل این جی تنصیبات  کے ساتھ فراہم کرتا ہے، جن میں سے 2 فلوٹنگ اسٹوریج اور گیسیفیکیشن یونٹس، اور 2 زیر زمین قدرتی گیس ذخیرہ کرنے کی  تنصیبات  شامل ہیں۔

روس، آذربائیجان، ایران، الجزائر اور بعض دیگر ممالک سے سالانہ تقریباً 60 بلین کیوبک میٹر قدرتی گیس مائع  حالت  میں خریدی جاتی ہے۔



متعللقہ خبریں