چشمہ شفاء۔12

آج ہم آپ کے ساتھ صحت کے جس مسئلے، اس کے گھریلو علاج  اور احتیاطوں کے بارے میں بات کریں گے وہ ہے "کھانسی"

1908695
چشمہ شفاء۔12

ڈاکٹر مہمت اُچار کے طبّی مشوروں کے ساتھ آپ کی خدمت میں حاضر ہیں۔

آج ہم آپ کے ساتھ صحت کے جس مسئلے، اس کے گھریلو علاج  اور احتیاطوں کے بارے میں بات کریں گے وہ ہے "کھانسی"۔

تو آئیے دیکھتے ہیں کہ کھانسی کی شکایت ہو تو کیا کرنا  چاہیےاور کس چیز سے پرہیز کرنا چاہیے۔

 

1۔  وافرمقدار میں پانی کا استعمال

تنفس کے بالائی راستوں میں انفیکشن کے نتیجے میں ناک سے پانی بہنے، گلے میں خراش  اور کھانسی جیسی تکالیف کا سامنا ہو سکتا ہے۔ ایسی صورت میں وافر مقدار میں پانی کا استعمال  ناک سے بہنے والی بلغم کو  پتلا کر کے گلے کی خراش کو ختم کرتا یا اس میں کمی لاتا ہے۔ دن میں کم از کم 2 لیٹر پانی ضرور پئیں۔

 

2۔ پیاز

ایک پیاز  کو چار حصوں میں کاٹیں اور ایک گلاس پانی کے ساتھ اُبالیں۔5 منٹ اُبالنے کے بعد چولہا بند کر کے کچھ دیر ٹھنڈا ہونے دیں۔ پینے کی حد تک ٹھنڈا ہونے پر پانی کو چھان لیں اور ایک چمچ شہد ملا کر نوش کریں۔

 

3۔ مُولی

ایک مُولی لیں ۔ پتّے کاٹ کر الگ کر دیں اور پیندے سے ایک سے ڈیڑھ انچ  چھوڑ کر کاٹ لیں۔  مولی کے کاٹے ہوئے ٹکڑے کو ایک گڑھے کی شکل میں کھودیں یہاں تک کے اس کے پیندے میں چھوٹا سا سوراخ ہو جائے۔ اب اسے ایک گلاس یا پیالی کے اوپر رکھیں اور اس کے گڑھے میں شہد ڈال دیں۔ مُولی کو اس شکل میں ایک دن تک پڑا رہنے دیں ۔ اگلے دن پیندے سے قطرہ قطرہ ٹپکے ہوئے مولی کا پانی ملے شہد کو استعمال کریں۔

 

4۔ لہسن اور دارچینی

ایک گلاس اُبلے پانی میں ایک ترئی لہسن اور دو ٹکڑے دارچینی  ڈالیں اور 5 منٹ کے لئے دم پر رکھ دیں۔ دم آنے کے بعد اس پانی کو چائے کی شکل میں استعمال کریں۔

 

5۔ ادرک اور شہد کی معجون

ادرک کے پاوڈر کو ایک چمچ شہد کے ساتھ ملا کر معجون کی شکل میں لے آئیں اور اس معجون کو کھانوں کے بعد  استعمال کریں۔

 

5۔ لیموں، سیاہ مرچ، نمک

ایک لیموں کو چار حصوں میں کاٹیں۔ ایک ٹکڑا لیں اور اس کے اوپر کالی مرچ اور نمک چھڑک کر  کھائیں۔ یہ طریقہ آپ کو جلد صحتیابی میں مدد دے گا۔

 

6۔ بادام مِلا مالٹے کا جوس

بادام کو گرائنڈر میں دڑ پھڑ کریں۔ 2 سے 3 چمچ موٹے موٹے کُٹے ہوئے باداموں میں ایک کپ مالٹے کا جوس ملا کر  نوش کریں۔ اس طریقے کو صبح شام استعمال کیا جا سکتا ہے۔

 

7۔  ہربل چائے اور شہد

لائم ٹی، روزہِپ، ساج، ادرک، پودینہ اور لیموں   یہ سب چیزیں کھانسی نزلے زکام میں مفید جڑی بوٹیاں ہیں۔ ان میں سے جس کی بھی چائے  بنائیں اس میں شہد ملا کر استعمال کریں۔ شہد، پانی کو اپنے اندر محفوظ کرنے کی خصوصیت کی وجہ سے، گلے کی خشکی کو دُور کرتا اور کھانسی کے دورانیے میں کمی لاتا ہے۔

 

8۔ کالی مرچ اور شہد

ایک چائے کا چمچ تازہ پِسی ہوئی کالی مرچ لیں اور اس میں 2 کھانے کے چمچ شہد مِلائیں۔  اُبلنے کے بعد کچھ دیر ٹھنڈا کیا ہوا گرم پانی اس آمیزے میں مِلائیں اور 15 منٹ کے دم کے بعد چھان کر استعمال کریں۔  بلغم والی کھانسی سے نجات کے لئے یہ ایک بہترین گھریلو ٹوٹکا ہے۔ احتیاط کریں تیز اُبلتا پانی شہد کی تاثیر کو ختم کر دیتا ہے۔

 

9۔ وٹامن سی والی غذائیں

اگر کھانسی تنفس کی بالائی نالیوں میں انفیکشن کی وجہ سے ہو تو گریپ فروٹ، مالٹا ، کینو اور لیموں جیسے سِٹرس پھلوں اور ٹماٹر، پالک، تازہ پھلیوں ، مٹر اور  پیاز جیسی وٹامن سی سے بھرپور سبزیوں کا استعمال کریں۔

 

10۔ سگریٹ نوشی سے پرہیز

سگریٹ  کا دھواں تنفس کے بالائی اور زیریں راستوں میں خراش کا سبب بنتا اور نظام تنفس کے محافظ میکانزم کو بھی نقصان پہنچاتا ہے۔ لہٰذا اس مضرِ صحت عادت کو فوراً ترک کر دیں۔

 

11۔ اپنے کمرے میں نمی کے درجے کو متوازن رکھیں

اگر آپ کے گھر کی ہوا خشک ہے تو اس سے بھی  کھانسی میں شدت پیدا ہو سکتی ہے۔ گھر کی فضاء  میں نمی کے درجے کو متوازن رکھنے کے لئے بخارات والے آلے کا استعمال کریں۔ اگر ریڈی ایٹر   وغیرہ  کا استعمال کر رہے ہیں تو  اس کے اوپر گیلا تولیہ  رکھ سکتے ہیں۔ ماحول میں نمی کادرجہ 30 سے 50 تک رکھیں۔ بخارات پیدا کرنے والے آلے کے طویل استعمال سے پرہیز کریں اور کھڑکیاں کھول کر  کمرے میں روزانہ تازہ ہوا  کا گُزر یقینی بنائیں۔

 

12۔ گرم پانی سے غسل

گرم پانی سے غسل ناک  سے بلغم بہنے  اور کھانسی  کی شدت میں کمی کرتا ہے۔ غسل خانے کے بخارات الرجی اور دمے  کی وجہ سے آنے والی کھانسی کے لئے بھی مفید ثابت ہوتے ہیں۔

 

13۔ پرفیوم اور ماحول کو خوشگوار بنانے والے اسپرے سے پرہیز کریں

پرفیوم اور ماحول میں چھڑکے جانے والے اسپرے گلے میں خراش پیدا کر کے  کھانسی کا سبب بن سکتے ہیں  لہٰذا ان چیزوں کے استعمال سے پرہیز کریں۔

 

14۔ رات گئے  کھانا کھانے سے پرہیز

اگر آپ کو معدے کے السر اور کھٹی ڈکاروں جیسے مسائل کا سامنا ہے تو شام 7 بجے کے بعد کھانا کھانے سے پرہیز کریں۔ رات کے وقت چائے کافی، گیس والے مشروبات  اور چاکلیٹ جیسی چیزیں کھانے سے بھی پرہیز کریں۔ یہ چیزیں معدے کی تیزابیت میں اضافہ کر کے گلے میں خراش اور کھانسی کا سبب بن سکتی ہیں۔  رات کو سوتے وقت تکیے کو بھی اونچا رکھنے کی طرف سے لاپرواہی نہ برتیں۔

 

15۔  بستر کی چادریں اور تکیے کے غلاف

الرجک جسمانی ساخت والے افراد، گھر میں گرد مٹی، کائی، پالتو  پرندوں کے پروں، پالتو بلّیوں اور کتوں  کی مردہ جلد اور بالوں کی وجہ سے کھانسی کا شکار ہو سکتے ہیں۔  ایسی صورت میں ضروری حفاظتی تدابیر اختیار کریں، اُونی بنیانوں، لحافوں اور قالینوں کا استعمال نہ کریں۔ بستر کی چادروں، لحاف کے غلافوں اور تکیوں کو کم از کم 55 درجے گرم پانی سے دھوئیں۔ خیال رکھیں کہ آپ کے کمرے کے پردے اور دیگر غلاف وغیرہ اُونی کی بجائے سُوتی ہوں۔

 

16۔  گرد جمع کرنے والی اشیاء سے پرہیز

اگر آپ کو الرجک کھانسی کی شکایت ہے تو کوشش کریں کے آپ کے گھر میں اشیاء کی تعداد کم سے کم ہو۔  کپڑے کے غلافوں والی اشیاء کی بجائے چمڑے وغیرہ جیسے غلافوں والی اشیاء کو ترجیح دیں۔ جلد گرد آلود ہونےا ور گرد کو جمع کرنے والی اشیاء کو الماری میں رکھیں۔



متعللقہ خبریں