چشمہ شفاء۔37

آج ہم آپ کے ساتھ جس مسئلے اور اس کے گھریلو علاج کے بارے میں بات کریں گے وہ ہے" ناخن کا جلد میں چُبھ کر التہاب کا سبب بننا"

1824025
چشمہ شفاء۔37

 

ڈاکٹر مہمت اُچار کےطبّی مشوروں پر مبنی  پروگرام "چشمہ شفاء" کے ساتھ آپ کی خدمت میں حاضر ہیں۔

 

آج ہم آپ کے ساتھ جس مسئلے اور اس کے گھریلو علاج کے بارے میں بات کریں گے وہ ہے" ناخن کا جلد میں چُبھ کر التہاب کا سبب بننا"۔ لیکن اگر آپ کے ناخن مسلسل جلد میں چُبھ کر پیپ بننے کا سبب بن رہے ہوں تو  ڈاکٹر سے ضرور رجوع کریں۔

زیادہ تر پاوں کے انگوٹھے کے ناخن کا کونا جلد میں چُبھ کر سخت تکلیف کا سبب بنتا ہے۔ روزمرّہ زندگی کے معمولات کو متاثر کرنے والے اس مسئلے کا فوری طور  پر علاج نہ کیا جائے جائے تو متاثرہ جگہ پر پیپ بن جاتی ہے ۔

 

ناخن چُبھنے کے قدرتی حل کے لئے تجاویز:

سیب کا سرکہ:

اگر ناخن چلنے میں دشواری کا سبب بن رہا ہو تو ایک ٹب میں پانی لے کر اس میں سیب کا سرکہ ملائیں اور 15 منٹ تک پیروں کو اس میں رکھیں۔

 

آرام دہ جرابوں اور جوتوں کا استعمال:

تنگ جرابوں اور جوتوں کی بجائے ذرا کھُلی اور آرام دہ جرابیں اور جوتے استعمال کریں۔ جب تک چُبھے ہوئے ناخن کا علاج جاری ہو بند جوتوں کی جگہ سلیپر یا سینڈل کا استعمال کریں۔

 

انگلیوں کا سیپریٹر:

انگلی کو دباو سے بچانے کے لئے سپریٹر کا استعمال کیا جائے۔ یہ انگلیوں کے درمیان فاصلہ رکھنے اور غیر ضروری دباو سے بچا کر ناخن کو جلد میں  گھُسنے سے بچاتا ہے۔

 

صابن کا پانی:

اگر متاثرہ جگہ پر التہاب بن گیا ہے تو صابن والے پانی اور خاص طور پر زیتون کے تیل کے صابن سے تیار کئے گئے پانی میں 15 منٹ تک پیروں کو ڈبوئیں۔ بعد میں ناخنوں کو صاف کریں۔

 

ٹی ٹری آئل:

ٹی ٹری آئل ایک اینٹی آکسیڈنٹ  اور اینٹی سیپٹک تیل ہے۔ اس تیل کو جلد پر بننے والی سوجن اور سرخی کے علاج کے لئے استعمال کیا جاتا ہے۔ جن افراد کو ناخن  کی وجہ سے مسائل کا سامنا ہو وہ ہر رات سونے سے قبل ناخنوں پر اس تیل کو لگائیں اور روئی کی مدد سے ناخنوں کی مالش کریں۔ استعمال سے قبل ریزر سے ناخن کے کونوں  کو ہموار کریں اور تیل کےناخنوں میں جذب ہونے تک مالش کریں۔

 

لہسن:

ناخنوں کو جلد میں چُبھنے سے بچانے کے لئے لہسن کا استعمال بھی آزمودہ طریقہ ہے۔ لہسن کی ایک  ترئی لیں اور اسے پیس کر آمیزے کی شکل میں لے آئیں۔  اس آمیزے کو ناخنوں پر لگائیں اور ایک گھنٹے کے انتظار کے بعد دھو لیں۔

 

میری گولڈ آئل:

ایک روئی کے پھاہے پر چند قطرے میری گولڈ آئل ٹپکائیں اور متاثر جگہ پر رکھیں۔ اس روئی کو جتنی زیادہ دیر تک ناخن پر رکھیں گے اتنا ہی تیل چُبھے ہوئے ناخن اور التہاب  کی جگہ پر گہرائی تک اُتر کر آرام کا سبب بنے گا۔  جلد آرام کے لئے اس تیل کو متواتر استعمال کریں۔

 

شہد اور لیموں کا پانی:

ناخن چُبھنے کی وجہ سے پیدا ہونے والی سرخی  اور سوجن کو دُور کرنے کے لئے شہد اور لیموں  کا پانی استعمال کیا جا سکتا ہے۔ ایک میٹھے کا چمچ شہد  لیں اور اس میں چند قطرے لیموں کا رس ملا کر  پٹّی کے ٹکڑے کو اس میں بھگو کر متاثرہ جگہ پر رکھیں اور اوپر سے پٹّی باندھ لیں۔ پٹّی کو کچھ دیر کے لئے بندھا رہنے دیں۔

 

بچھو بوٹی:

ایک مٹھی تازہ بچھو بوٹی لے کر پانی میں ابالیں اور نرم ہونے پر اس کو پیس کر لیپ تیار کر لیں۔ اس لیپ کو متاثر جگہ پر لگائیں اور 10 سے 15 منٹ تک لگا رہنے دیں۔

 

اجوائن کا پانی:

اجوائن کی چائے کو ایک ٹب میں ڈالیں  اور اس پانی میں چُبھے ہوئے ناخن والے پاوں کو رکھیں۔ ایک ہفتے تک اس طریقے کا استعمال تکلیف میں آرام  دے  گا۔

 

ناخن کے جلد میں چُبھنے کے سدباب کے لئے تجاویز:

  • ناخنوں کو جلد کے بالکل قریب سے کاٹنے سے پرہیز کریں۔
  • ناخنوں کے کونوں کو بیضوی شکل دینے سے پرہیز کریں۔
  • سوتی جرابوں کا استعمال کریں اور جرابیں روزانہ تبدیل کریں۔
  • ناخن جلد میں چُبھ گیا ہو تو بند جوتوں کی بجائے کھُلے جوتوں کا استعمال کریں۔
  • تنگ اور لمبی  تھوتھنی والے  یا پھر ایڑھی والے جوتے پہننے سے پرہیز کریں۔
  • اگر آپ خود ناخن نہیں کاٹ سکتے تو ناخنوں کی حفاظت کے لئے کسی پیڈی کیور مرکز سے رجوع کریں۔
  • پیروں کو خشک رکھنے کی کوشش کریں۔
  • اگر ناخن بار بار  جلد میں چُبھ کر مسئلہ پیدا کر رہا ہو تو ڈاکٹر سے رجوع کریں۔


متعللقہ خبریں