ترک پکوان44

آبی پیٹس

ترک پکوان44

ترک کھانوں میں خمیر     کا استعمال کافی ہوتاہے بالخصوص پیٹس  وغیرہ کافی بنائے جاتے ہیں جن کا استعمال صبح کے ناشتے سے لے کر رات کے کھانے  تک  ہوتا ہے۔  پیٹس بنانے کا رواج ویسے  یورپ سے لے کر افریقہ حتی ایشیا تک پایا جاتا ہے   جنہیں ترک  باورچی خانےمیں مقام  دور عثمانی کی وجہ سے ملا ۔ ترکی زبان میں پیٹس کو "بوریک"  کہا جاتاہے  جن میں پنیر ،آلو  ،پالک یا قیمے کا استعمال ہوتا ہے۔

آج ہم اس پروگرام میں آپ کو آبی  پیٹس یعنی بوریک بنانے کی  ترکیب بتائیں گے۔

 

 اجزا کچھ یوں ہیں۔

5 عدد گلاس  میدہ

4 عدد ا نڈے

2 تہائی گلاس پانی

نصف ک چمچ نمک

دو تہائی گلاس پگھلا ہوا مکھن

2 لیٹر گرم اپنی

نصف چمچ نمک 

1 کھانے کا چمچ  روغن زیتون

400 گرام کھویا

نصف گٹھی ہرا دھنیا

 

 5 گلاس میدہ،انڈے ، دو تہائی گلاس پانی  اور نصف چمچ نمک  ملا کر اسےگوندھیں اور  ان کے  دس عدد پیڑے بنا لیں   اور انہیں مل مل کے کپڑے سے ڈھانپ  کر  1 گھنٹے تک  رکھیں ۔ اس دوران کھوئے کو کانٹے سے پیس کر  اس میں کٹا  ہوا ہرا دھنیا ملا لیں۔ اب ای چولہے پر  پتیلے  میں 2 لیٹر پانی  ابالیں اور اس میں نصف چمچ نمک اور 1 کھانے کا چمچم روغن زیتون ڈالیں۔ خمیر  کے پیڑوں کو اب   بیلن کے ذریعے  پتلا کریں  اور  اس ابلتے پانی میں 30 تا 35 منٹ تک  ابالیں ۔ ابالنے کے بعد انہیں  ٹھنڈے پانی میں 10 تا 15  لمحوں کےلیے  ڈبویں ۔ اب اوون طشتری  کو مکھن سے چکنا کریں  اور  میدے  کی روٹیوں کو طشتری میں  رکھتےہوئے ان میں  کھوئے کا آمیزہ    بھریں  اور اس پر   ایک چمچ کی مدد سے پگھلا ہوا مکھن بھی ڈالیں  اس طرح سے  تمام روٹیوں کو بند کریں  اور انہیں  190 درجہ سینٹی گریڈ پر  اوون میں  پکنے دیں ۔ پکنے کے بعد گرم گرم  تناول کریں

 

 

 

 

 



متعللقہ خبریں