کیا آپ جانتے ہیں۔ 11

کیا آپ جانتے ہیں۔ 11

کیا آپ جانتے ہیں۔ 11

پروگرام " کیا آپ جانتے ہیں" کے ساتھ آپ کی خدمت میں حاضر ہیں۔

کیا آپ جانتے ہیں کہ ترک عورت کو ووٹ ڈالنے اور منتخب ہونے کا حق دنیا کے متعدد ممالک  سے بہت پہلے دیا گیا۔

1930 میں منظور کئے جانے والے بلدیہ قوانین کے ساتھ  نو مولود جمہوریہ ترکی کے ہر معاشرتی و اجتماعی  مرحلے میں قائدانہ کردار ادا کرنے والی خواتین کو ابتدائی سیاسی حقوق   دئیے گئے۔ اس کے بعد 1934 میں مالاتیا کے اسمبلی ممبر عصمت انونو اور ان کے 191 ساتھیوں نے ایک آئینی تبدیلی کی تجویز پیش کی جس کی منظوری سے ترک عورت کو اسمبلی ممبر منتخب ہونے کا حق حاصل ہوا۔

ان تاریخوں میں یورپ اور امریکہ کے بعض ممالک میں عورتوں کو ابھی ایسے عصری حقوق حاصل نہیں تھے۔ یکم مارچ 1935 کو ترکی کی قومی اسمبلی کے اجلاس میں کُل 18 خواتین اسمبلی ممبران موجود تھیں۔

خواتین کو فرانس میں 1944 میں، اٹلی میں 1945 میں ، جاپان میں 1950 میں اور سعودی عرب میں 2011 میں ووٹ ڈالنے کا حق دیا گیا۔ اسوٹزر لینڈ  میں ، جہاں ترکی کا مدنی قانون نافذ کیا گیا، 1971 تک عورتوں کو ووٹ ڈالنے یا منتخب ہونے کا حق حاصل نہیں تھا۔

 



متعللقہ خبریں