عالمی ادارہ صحت: غزّہ میں، کسی اور ہسپتال سے محرومی کی، ہمّت نہیں رہی

غزّہ۔یورپ ہسپتال کو دوبارہ فعال کرنے کے لئے فوری حفاظتی تدابیر کی ضرورت ہے۔ غزّہ مزید ہسپتالوں سے محرومی کا متحّمل نہیں رہا: گبریسس

2159634
عالمی ادارہ صحت: غزّہ میں، کسی اور ہسپتال سے محرومی کی، ہمّت نہیں رہی

عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل تھیڈورس ایڈہینم گبریسس نے کہا ہے کہ غزّہ میں، کسی اور ہسپتال سے محرومی کی، ہمّت نہیں رہی۔

گبریسس نے جنوبی غزّہ کے سب سے بڑے "غزّہ۔یورپ ہسپتال" کے انخلاء سے متعلق بیان جاری کیا ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ طبّی آلات و سامان کے تحفظ کی خاطر، عالمی ادارہ صحت نے غزّہ۔یورپ ہسپتال کی انخلاء کاروائیوں کے ساتھ تعاون کیا ہے۔ جیسا کہ ہفتے کے آغاز میں بھی ہم نے  اعلان کیا تھا کہ اسرائیل کی طرف سے علاقہ خالی کرنے کے مطالبے کے باعث  مریض اور صحت کا عملہ ہسپتال کو ترک کرنے پر مجبور ہو گیا تھا اور ہسپتال 2 جولائی کو خدمات کے لئے بند کر دیا گیا تھا"۔

گبریسس نے کہا ہے کہ "ہسپتال کو دوبارہ فعال کرنے کے لئے فوری حفاظتی تدابیر کی ضرورت ہے۔ غزّہ مزید ہسپتالوں سے محرومی کا متحّمل نہیں رہا"۔

انہوں نے ایندھن کی قلّت کے باعث صحت کی خدمات  میں مزید رکاوٹوں کی توقع ظاہر کی اور کہا ہے کہ کل غزّہ میں صرف 90 ہزار لیٹر پیٹرول داخل ہو سکا ہے  اور صرف شعبہ صحت کی یومیہ ضرورت ہی  80 لیٹر ہے۔

گبریسس نے کہا ہے کہ ایندھن کی قلّت نے عالمی ادارہ صحت اور اقوام متحدہ کو ناممکنات کا انتخاب کرنے پر مجبور کر دیا ہے۔ ہسپتالوں میں خدمات کو مفلوج ہونے سے بچانے کے لئے ہم نے ناصر ہسپتال، العمل ہسپتال، کویت ہسپتال اور فلسطین ہلالِ احمر ہسپتال سمیت گنے چُنے ہسپتالوں کو محدود پیمانے پر ایندھن فراہم کیا ہے۔

انہوں نے، غزّہ کے جنوبی شہر رفح میں جھڑپوں کی وجہ سے علاقے میں مرکزی پیٹرول ڈپووں تک رسائی مکمل بند ہونے کا ذکر کیا اور  اپیل کی ہے کہ خوراک، ایندھن اور طبّی سامان کی غزّہ میں منّظم رسائی کے لئے  7 مئی سے بند رفح سرحدی چوکی کو کھول دیا جائے۔

واضح رہے کہ فلسطین میں عالمی ادارہ صحت کے نمائندے رچرڈ پیپرکورن نے کہا تھا کہ، اسرائیل کی طرف سے خان یونس کے انخلاء  کا مطالبہ جاری ہونے کے بعد سے، غزّہ۔یورپ ہسپتال کی خدمات شدّت سے متاثر ہوئی ہیں۔



متعللقہ خبریں