نظام صحت کی ہنگامی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے2٫54 ارب ڈالر درکار ہیں، عالمی ادارہ صحت

عالمی سطح پر انسانی امداد  کی ضرورت کا 80 فیصد جھڑپوں  اور جنگوں سے تعلق رکھتا ہے

1937131
نظام صحت کی ہنگامی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے2٫54 ارب ڈالر درکار ہیں، عالمی ادارہ صحت

عالمی ادارہ  صحت کے ڈائریکٹر جنرل تیدروس ادہانوم گیبریئس نے 2023 میں دنیا بھر میں صحت کی ہنگامی صورتحال کا سامنا کرنے والے لاکھوں انسانوں  کے لیے 2.54 بلین ڈالر کی امداد کی اپیل میں  تعاون کی درخواست کی ہے۔

ڈبلیو ایچ او نےسال  2023 کے لیے صحت کی ہنگامی صورتحال کا سامنا کرنے والے لاکھوں لوگوں کی مدد کے لیے کل سے  اپنی کال کا آغاز کیا ہے۔

ہنگامی صحت کی صورتحال اپیل کے تعارفی پروگرام  میں  خطاب  کرنے والے گیبرے سُس نے  سن 2023 میں اس سے قبل کبھی  نہ دیکھے گئے بحرانوں  کا سامنا کرنے کا ذکر کرتے ہوئے اس  طرف اشارہ کیا کہ گزشتہ برس کے مقابلے میں انسانی امداد کے  محتاج  افراد کی تعداد میں تقریباً 25 فیصد کا اضافہ  دیکھنے میں آیا ہے۔

کرہ ارض کو متعدد بحرانوں کا سامنا ہونے کا ذکر کرنے والے گیبرے سُس نے کہا  کہ سب سے زیادہ متاثر ہونے والے  بے یارو مددگار انسان ہیں، "عالمی سطح پر انسانی امداد  کی ضرورت کا 80 فیصد جھڑپوں  اور جنگوں سے تعلق رکھتا ہے۔  روک تھام کے قابل زچہ و بچہ  کی نصف اموات نازک، تنازعات سے متاثرہ اور  کمزور علاقوں میں ہوتی ہیں۔ یہ فنڈز دنیا بھر میں ڈبلیو ایچ او کی امدادی سرگرمیوں میں کام آئیں  گے۔"

ان کا کہنا تھا کہ مسائل کو نظر انداز نہیں کیا جانا چاہیے اور  یہ معاملات خود بخود حل  نہیں ہوا کرتے، اس بنا پر  ہم دنیا بھر میں   عطیات جمع کرنے والے افراد سے  2٫54  ارب ڈالر کی صحت کی  ہنگامی امداد کی اپیل   میں تعاون کی درخواست کرتے ہیں۔

ڈبلیو ایچ او کا مقصد پاکستان میں آنے والے سیلاب، افریقہ میں غذائی عدم تحفظ، یوکرین میں جنگ اور یمن، افغانستان، شام اور ایتھوپیا میں تنازعات جیسی تمام ہنگامی صورتحال سے نمٹنا ہے۔

دوسری طرف کورونا وائرس، ہیضہ، خسرہ اور دیگر مہلک وبائیں جوکہ نظامِ صحت  کو متاثر کر رہی ہیں ، ان بحرانوں میں شامل ہیں جن سے ڈبلیو ایچ او اس وقت نبرد آزما ہے۔



متعللقہ خبریں