ایبولا وائرس اب یوگنڈا پہنچ گیا

افریقہ میں ہزاروں افراد کی ہلاکت کا سبب بننے والا ایبولا متعدی وائرس اب یوگنڈا میں ہلاکتوں کا سبب بن رہا ہے

ایبولا وائرس اب یوگنڈا پہنچ گیا

افریقہ میں ہزاروں افراد کی ہلاکت کا سبب بننے والا ایبولا متعدی وائرس اب یوگنڈا میں ہلاکتوں کا سبب بن رہا ہے۔

عالمی ادارہ صحت کی طرف سے جاری کردہ بیان کے مطابق یوگنڈا میں اس وقت تک 3 افراد میں ایبولا وائرس کی تشخیص ہوئی ہے اور وائرس کا مریض ایک 5 سالہ بچہ زیر علاج ہسپتال میں دم توڑ گیا ہے۔

عالمی ادارہ صحت کے مطابق یہ بچہ اپنے کنبے کے ہمراہ 9 جون کو جمہوریہ کانگو میں داخل ہوا اور بچے میں ایبولا وائرس کی تشخیص ہوتے ہی اس کا علاج شروع کر دیا گیا لیکن بچہ جانبر نہیں ہو سکا۔

ملک میں وائرس کے داخلے کے ساتھ یوگنڈا وزارت صحت نے  بیماری پر کنٹرول کے لئےخصوصی ورکنگ گروپ قائم کر دیا ہے۔

جمہوریہ کانگو میں ماہِ جولائی کے اواخر میں ایبولا کی متعدی بیماری کا آغاز ہوا ور اور تب سے لے کر اب تک تقریباً ایک ہزار 400  افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

ابتدائی طور پر اس وائرس کا آغاز دسمبر 2013 میں مغربی افریقہ سے ہوا اور اس کے بعد 2014 سے 2017 کے سالوں میں گنی، لائبیریا اور سیرا لیون میں 30 ہزار سے افراد اس وائرس میں مبتلا ہوئے جن میں سے 11 ہزار سے زائد ہلاک ہو گئے تھے۔



متعللقہ خبریں