امریکہ: خسرے میں مبتلا مریضوں کی تعداد 764 تک پہنچ گئی

یویارک اور راک لینڈ کاونٹی میں 52خسرے کے مریضوں کے علاوہ مزید  60 مریضوں میں بیماری کی تشخیص  کے ساتھ مریضوں کی کُل تعداد 764 تک پہنچ گئی

امریکہ: خسرے میں مبتلا مریضوں کی تعداد 764 تک پہنچ گئی

امریکہ میں خسرے میں مبتلا مریضوں کی تعداد 764 تک پہنچ گئی  ہے۔

امریکہ کے بیماریوں کی روک تھام اور حفاظتی اقدامات کے مرکز  نے متعدد ریاستوں میں خسرے کی متعدی بیماری سے متعلق تازہ اعداد و شمار کا اعلان کیا ہے۔

جاری کردہ بیان کے مطابق نیویارک اور راک لینڈ کاونٹی میں 52خسرے کے مریضوں کے علاوہ مزید  60 مریضوں میں بیماری کی تشخیص  کی گئی ہے اور اس طرح مریضوں کی کُل تعداد 764 تک پہنچ گئی ہے۔

صحت کے حکام کے مطابق اکتوبر 2018 میں ویکسین لگوائے بغیر اسرائیل جا کر  واپس لوٹنے والے بچے میں پہلی دفعہ خسرے کی تشخیص کی گئی اور اس کے بعد سے اب تک نیو یارک میں 716 مریضوں میں خسرے کی تشخیص کی گئی ہے۔

اطلاع کے مطابق بیماری نیویارک میں سب سے زیادہ یہودیوں کے اکثریتی رہائشی علاقوں میں دیکھی گئی ہے کیونکہ اورتھوڈوکس یہودی  اپنے بچوں کو ویکسین لگوانے سے انکاری ہیں۔ ان کے خیال میں ویکسین بچوں میں نفسیاتی امراض کا سبب بنتی ہے۔

ابتدا میں یہ مرض 22 ریاستوں میں دیکھا جا رہا تھا لیکن حالیہ دنوں میں 5 خسرے کے مریضوں کے ساتھ ریاست پینسلوانیا میں ان میں شامل ہو گئی ہے ۔

واضح رہے کہ امریکہ میں رواں سال کے آغاز سے شروع ہونے والی اس متعدی بیماری میں مبتلا مریضوں  کی تعداد حالیہ 25 سالوں کی بلند ترین تعداد ہے۔

امریکہ نے سال 2000 میں ملک میں خسرے کے مکمل خاتمے کا اعلان کیا تھا لیکن 2000 سے لے کر اب تک 667افراد میں خسرے کی تشخیص کی گئی ہے ۔



متعللقہ خبریں