فنانشل ایکشن ٹاسک فورس نے پاکستان کو گرے لسٹ ہی میں رکھنے کا فیصلہ کرلیا

فرانس کے دارلحکومت پیرس میں 13 اکتوبر سے جاری ایف اے ٹی ایف کا اجلاس ختم ہو گیا ہے۔ ایف اے ٹی ایف کے سربراہ نے مختصر پریس کانفرنس کے دوران پاکستان کی جانب سے اٹھائے گئے اقدامات کی تعریف کی

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس نے پاکستان  کو گرے لسٹ ہی میں رکھنے کا فیصلہ کرلیا

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) نے پاکستان کا نام فی الحال گرے لسٹ میں رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔

فرانس کے دارلحکومت پیرس میں 13 اکتوبر سے جاری ایف اے ٹی ایف کا اجلاس ختم ہو گیا ہے۔

ایف اے ٹی ایف کے سربراہ نے مختصر پریس کانفرنس کے دوران پاکستان کی جانب سے اٹھائے گئے اقدامات کی تعریف کی۔

فرانس کے دارالحکومت پیرس میں ایف اے ٹی ایف کے  صدر نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ منی لانڈرنگ اور دہشتگردی کے خاتمے کیلیے پاکستان نے مثبت اقدامات کیے ہیں۔

 ایف اے ٹی ایف کے صدر نے کہا کہ پاکستان کو گرے لسٹ میں شامل ہونے سے بچنے کے لیے 2020 تک کا ٹائم دیتے ہیں لہٰذا پاکستان کا نام فی الحال گرے لسٹ میں ہی رہے گا۔

ایف اے ٹی ایف نے پاکستانی اقدامات کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ معاملات مزید بہتر کرنے پاکستان کو فروری 2020 تک کا وقت دیا گیا ہے

واضح رہےکہ ایف اے ٹی ایف کے جائزہ اجلاس میں وفاقی وزیر اقتصادی امور حماد اظہر کی قیادت میں پاکستان کا 5 رکنی وفد شریک ہے۔



متعللقہ خبریں