چین کا سی پیک منصوبہ پاکستانی معیشت پر ایک بہت بڑا بوجھ ہے، امریکہ

یہ کثیر الارب ڈالر منصوبہ ادائیگیوں آنے پر  پاکستانی معیشت کے لیے مشکلات  کھڑی کرے گا

چین کا سی پیک منصوبہ پاکستانی معیشت پر ایک بہت بڑا بوجھ ہے، امریکہ

متحدہ امریکہ  نے پاکستان کو متنبہ  کیا ہے کہ پاک چین اقتصادی راہداری (سی پیک) منصوبہ پہلے سے قرضوں کے بوجھ تلے دبے، بدعنوانی میں اضافے کا سامنا کرنے والے پاکستان کے لیے مزید مشکلات کا موجب  بنے گا اور اس کا  منافع  صرف چین کو ہی ملے گا۔

 امریکی اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ میں جنوبی ایشیائی امور کی اعلیٰ ترین  عہدیدار ایلس ویلز نے ایک خطاب میں کہا ہے کہ  یہ کثیر الارب ڈالر منصوبہ ادائیگیوں آنے پر  پاکستانی معیشت کے لیے مشکلات  کھڑی کرے گا۔

ویلز کا کہنا تھا کہ سی پیک، پاکستان  کی امداد سے ہٹ کر  مالی معاملات کا  ایک  ایسا نظام  ہے جو چین کی سرکاری کمپنیوں کے فوائد کی ضمانت دیتا ہے    اور یہ  پاکستان کے لیے انتہائی معمولی سطح کا  فائدہ پہنچائے گا۔

ایک عالمی میڈیا رپورٹ کے مطابق یہ خصوصی انتباہ  ایک ایسے وقت سامنے آیا ہے کہ جب  امریکہ اور پاکستان  مسائل کے شکار اپنے باہمی تعلقات کی ازسو نو تجدید کی کوشش  میں ہیں۔

امریکی عہدیدار نے چینی  مالیاتی طریقہ کار کے پاکستان پر طویل المدت اثرات پر بھی بات کرتے ہوئے حکومت پاکستان پر زور دیا  کہ نئی حکومت پر پڑنے والے اس بوجھ کا جائزہ لیا جائے جس میں چینی حکومت کا قرض 15 ارب ڈالر جبکہ چین کا کمرشل قرض 6 ارب 70 کروڑ ڈالر ہے۔

انہوں نے اس امر کی ضرورت پر بھی زور دیا کہ پاکستان کو یہ جان لینا چاہیے کہ  چین قرضے دے رہا ہے امریکہ کی طرح امداد نہیں۔

انہوں نے خبردار کیا کہ اگر قرضوں کی ادائیگیاں موخر بھی کردی جائیں تو بھی یہ پاکستان کی معاشی ترقی کی صلاحیت پر اثر انداز ہوں گی اور وزیر اعظم عمران خان کے اصلاحاتی ایجنڈے کو ناکارہ  بنا دیں گے۔



متعللقہ خبریں