کوئٹہ حملے کا ہدف طالبان لیڈر تھے، دعوی

دھماکے میں ہیبت اللہ آہند زادے کےو الد محمد خان اور بھائی حمداللہ ہلاک جبکہ ان کا بیٹا احمد اللہ زخمی ہو ا ہے

کوئٹہ حملے کا ہدف طالبان لیڈر تھے، دعوی

دعوی کیا گیا ہے کہ کل  کوئٹہ میں 5  افراد کی ہلاکت اور 20 سے زائد کے زخمی ہونے کا موجب بننے  والے بم حملے میں طالبان لیڈر ہیبت اللہ آہند زادے کو ہدف بنایا گیا تھا۔

الجزیرہ  کی طالبان تنظیم کے حلقوں کے حوالے سے خبر  کے مطابق  کوئٹہ کے علاقے کچلاک کی ایک جامع مسجد میں نماز ِ جمعہ کے دوران کیے گئے بم حملے میں  تنظیم کے لیڈر آہند زادے کو ہدف بنایا گیا تھا۔

یہ بھی دعوی کیا گیا ہے کہ اس حملے میں نمازِ جمعہ کی ادائیگی کے لیے مسجد آنے کی توقع ہونے والے طالبان لیڈر کو ہدف بنایا گیا تھا تا ہم ہیبت اللہ آہند زادے کے آخری لمحے پر اپنے پروگرام  میں تبدیلی کرتے ہوئے اس مسجد کو نہ آنے کے باعث یہ اس حملے سے بچ گئے ہیں۔

کوئٹہ پولیس کا کہنا ہے کہ دھماکے میں ہیبت اللہ آہند زادے کےو الد محمد خان اور بھائی حمداللہ ہلاک جبکہ ان کا بیٹا احمد اللہ زخمی ہو ا ہے۔

اس حملے کی ذمہ داری تاحال کسی گروہ نےقبول  نہیں کی۔



متعللقہ خبریں