پاکستان اورملائیشیاکامختلف شعبوں میں قریبی تعاون کافیصلہ، ویزوں کےجزوی خاتمےکامعاہدہ،مشترکہ اعلامیہ

عمران خان اور مہاتیر محمد نےمسلم امہ کے مضبوط اتحاد، تعلیم، سیاحت، عوامی روابط، سماجی و اقتصادی ترقی کے شعبوں میں تعاون پر اتفاق کیا

پاکستان اورملائیشیاکامختلف شعبوں میں قریبی تعاون کافیصلہ، ویزوں کےجزوی خاتمےکامعاہدہ،مشترکہ اعلامیہ

وزیراعظم عمران خان نے دو روزہ سرکاری دورہ ملائیشیا کے موقع پر بدھ کو اپنے ملائیشیئن ہم منصب سے ان کے دفترمیں ملاقات کی ، ملائیشیا کے وزیراعظم ڈاکٹر مہاتیرمحمد کی دعوت پر وزیراعظم عمران خان نے 20اور21نومبر2018ءکو ملائیشیا کا سرکاری دورہ کیا،پردانہ سکوائر ، پتراجایہ میں ملائیشیا کے وزیراعظم ڈاکٹر مہاتیرمحمد کے دفتر پہنچنے پر وزیراعظم عمران خان کا پرتپاک استقبال کیا گیا۔

استقبالیہ تقریب کے بعد وزیراعظم عمران خان نے پترا جایہ میں اپنے ملائیشیئن ہم منصب ڈاکٹرمہاتیرمحمد سے ملاقات کی ۔دونوں رہنماﺅں نے انتہائی خوشگوار ماحول میں مختلف امور پر تفصیلی اور بامعنی مذاکرات کئے۔

مذاکرات کے بعد وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے دورۂ ملائیشیا کا مشترکہ اعلامیہ جاری کر دیا گیا۔

وزیر اعظم عمران خان کی ملائشین ہم منصب مہاتیر محمد سے ملاقات کے دوران دو طرفہ، علاقائی اور بین الاقوامی امور پر تبادلہ خیال ہوا، وزیر اعظم عمران خان نے انتخابات میں کامیابی پر مہاتیر محمد کو مبارک باد دی۔

مشترکہ اعلامیے کے مطابق پاک ملائیشین وزرائے اعظم کی ملاقات کے دوران دو طرفہ تعلقات میں اضافے کے لیے ہر سطح پر روابط بڑھانے کی ضرورت پر زور دیا گیا۔

آئندہ سال اسلام آباد میں پاکستان اور ملائیشیا کی جانب سے مشاورتی اجلاس کے انعقاد پر اتفاق کیا گیا ، مہاتیر محمد نے توانائی کے بحران پر قابو پانے کے لیے پاکستان سے تعاون کے عزم کا اظہار کیا۔

مشترکہ اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ عمران مہاتیر ملاقات میں دونوں ممالک نے اقتصادی تعاون، تجارت اور سرمایہ کاری کی ضرورت پر زور دیا۔

عمران خان اور مہاتیر محمد نےمسلم امہ کے مضبوط اتحاد، تعلیم، سیاحت، عوامی روابط، سماجی و اقتصادی ترقی کے شعبوں میں تعاون پر اتفاق کیا۔

اعلامیے کے مطابق پاکستان نے کرپشن کے خاتمے کے لیے ملائیشیا کے تجربات سے استفادہ کرنے کا اظہار کیا جبکہ ملائیشیا نے دہشت گردی کے خاتمے کے لیے پاکستان کی کامیاب کوششوں کو سراہا۔

اعلامیے کے مطابق پاک ملائشین وزرائے اعظم ملاقات کے دوران مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرنے کے لیے او آئی سی کا کرداربھی زیر غور آیا، وزیر اعظم عمران خان نے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے مہاتیر محمد کو آگاہ کیا۔



متعللقہ خبریں