ملک کے تمام صوبوں میں یکساں بنیادی نظام تعلیم اور نصاب تعلیم متعارف کروانے پرغور : عمران خان

وزیرِاعظم عمران خان نے کہا ہے کہ نظامِ تعلیم اور نصاب تعلیم کی بہتری پی ٹی آئی حکومت کی اولین ترجیح ہے، شعبہ تعلیم میں اصلاحات کا بنیادی مقصد تفریق کاخاتمہ اور مدرسے کے بچے کو اوپر لانا ہے، مدارس کو درپیش تمام مسائل باہمی مشاورت سے حل کریں گے

1061993
ملک کے تمام  صوبوں  میں  یکساں بنیادی نظام تعلیم  اور نصاب  تعلیم متعارف کروانے پرغور : عمران خان

 وزیرِاعظم عمران خان نے کہا ہے کہ نظامِ تعلیم اور نصاب تعلیم کی بہتری پی ٹی آئی حکومت کی اولین ترجیح ہے، شعبہ تعلیم میں اصلاحات کا بنیادی مقصد تفریق کاخاتمہ اور مدرسے کے بچے کو اوپر لانا ہے، مدارس کو درپیش تمام مسائل باہمی مشاورت سے حل کریں گے۔

 انہوں نے یہ بات علماءکرام کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہی جس نے بدھ کو وزیرِاعظم آفس میں ان سے ملاقات کی۔ وفد میں مفتی منیب الرحمان، مولانا محمد حنیف جالندھری، صاحبزادہ عبدالمصطفی ہزاروی، مولانا یاسین ظفر، مولانا عبدالمالک، ڈاکٹر مولانا عطاءالرحمن اور مولانا سید قاضی نیاز حسین نقوی شامل تھے۔ وفاقی وزیر برائے تعلیم شفقت محمود، وزیر برائے مذہبی امور نورالحق قادری، وزیرِ مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی بھی ملاقات میں موجود تھے۔

ملاقات میں حکومت کی جانب سے شعبہ تعلیم (نظام و نصاب تعلیم) کی بہتری کےلئے کی جانے والی اصلاحات اور اس سلسلہ میں مدارس کے کردار و خدمات اوران سے متعلقہ امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ علماءکرام کے وفد نے وزیرِاعظم عمران خان کو وزیراعظم منتخب ہونے پر مبارکباد دی۔ وفد نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وہ خلوص دل سے دعاگو ہیں کہ اللہ تعالیٰ وزیراعظم کو اپنے مشن میں سرخروکرے اور قوم کی توقعات پر پورا اترنے میں کامیاب کرے۔

وفد نے وزیراعظم کو یقین دہانی کرائی کہ علماءکرام حکومت کے تمام مثبت اقدامات کی بھرپور حمایت کریں گے۔ وزیرِاعظم کی جانب سے حکومتی اقدامات کی حمایت پر علماءکرام کا شکریہ ادا کیا گیا۔ اس موقع پر وزیراعظم نے کہا کہ ملک میں تین مختلف نظام تعلیم کی موجودگی قوم کی تقسیم اور مختلف کلچرز کو پروان چڑھانے کا باعث رہی ہے، ایک قوم کی تعمیر کےلئے ضروری ہے کہ بنیادی نظام تعلیم اور نصاب تعلیم میں یکسانیت ہو۔



متعللقہ خبریں