چین نے پاکستان  کوایسےترجیحی تعاون ماڈل کی پیش کش کردی جس سے بھارت بھرمیں کھلبلی مچ گئی

صدر ممنون سے ملاقات میں چینی صدر نے کہا ہے کہ چین پاکستان سے انتہائی اعلیٰ سطح کے اسٹرٹیجک تعلقات قائم کرنا چاہتا ہے جو عالمی سطح پرایک ماڈل بنےکیونکہ  پاکستان کے ساتھ ہمارے بڑے گہرے تعلقات ہیں اور ہم پاکستان کو  سب ترجیح  دیتے ہیں

چین نے پاکستان  کوایسےترجیحی تعاون ماڈل کی پیش کش کردی جس سے بھارت بھرمیں کھلبلی مچ گئی

چینی صدر شی جن پنگ  نے کہا ہے کہ   چین پاکستان سے انتہائی اعلیٰ سطح کے اسٹرٹیجک تعلقات قائم کرنا چاہتا ہے جو پوری دنیا کے لیے  ایک  نیا ماڈل بن کر سامنے آئے۔  

صدر ممنون سے ملاقات میں چینی صدر نے کہا ہے کہ چین پاکستان سے انتہائی اعلیٰ سطح کے اسٹرٹیجک تعلقات قائم کرنا چاہتا ہے جو عالمی سطح پرایک ماڈل بنےکیونکہ  پاکستان کے ساتھ ہمارے بڑے گہرے تعلقات ہیں اور ہم پاکستان کو  سب ترجیح  دیتے ہیں۔

، صدر ممنون حسین سے گزشتہ روز شنگھائی تعاون تنظیم کے اجلاس کے موقع پر ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے چینی صدر شی جن پنگ نے کہا کہ چین اور پاکستان کے درمیان سدا بہار اسٹرٹیجک تعاون صرف مشترکہ اثاثوں تک محدود نہیں بلکہ یہ تعلق عالمی تعلقات میں ایک نئے ماڈل تک چلے جانے کی پیشکش کرتا ہے۔

چینی صدر نے صدر ممنون کو تنظیم کا باقاعدہ رکن بننے پر مبارکباد دی، چینی صدر نے کہا کہ چین سی پیک کی صورت میں مواصلاتی اسٹرکچر کی تعمیر تسلسل سے جاری رکھے گا، چین خطے میں ون بیلٹ ون روڈکے تحت توانائی اور مواصلات کے ڈھانچے کی تعمیر کی صورت میں دوطرفہ تعاون کا سلسلہ جاری رکھے گا، انھوں نے کہا کہ چین پاکستان سے مل کر دہشت گرد ی کے خلاف اپنے تعاون کو مزبد بڑھانا چاہتا ہے۔

انھوں نے زوردیا کہ چین پاکستان کی قومی آزادی کی حفاظت، خود مختاری اور علاقائی سالمیت کیلیے اس کی مدد جاری رکھے گا، پاکستان کی پوری مدد کی جائے گی تاکہ وہ اپنی ترقی کا راستہ خود طے کر سکے، پاکستان اور چین دیگر دوسرے ممالک کی طرح اپنے اہم مفادات اور عام مفادات کے حامل امور پر ایک دوسرے کی مدد جاری رکھیں گے۔

اس موقع پر دونوں رہنماؤں نے پاکستان اورچین کے درمیان آزمودہ اسٹرٹیجک شراکت داری اور قریبی دوستانہ تعلقات پر روشنی ڈالی اورکہا کہ پاکستان اور چین نے ہمیشہ ایک دوسرے کا ساتھ دیا ہے، دونوں ممالک وقت کی آزمائش پر پورا اترے ہیں اور دونوں ممالک آزمودہ تعلقات، تعاون اور شراکت داری کو مزید مضبوط بنائیں گے۔

خبر ایجنسی کے مطابق چینی صدر شی جن پنگ نے دہشت گردی کے خلاف جنگ اورافغانستان و خطے میں امن و استحکام کیلیے پاکستان کے کردار اورکوششوں کی تعریف کی، اس موقع پر صدر ممنون حسین نے کہا کہ چین پاکستان کا قابل اعتماد اور پائیدار دوست ہے، دونوں ممالک کے تعلقات غیرمتزلزل ہیں، انھوں نے کہاکہ پاکستان ’’متحدہ چین‘‘ پالیسی اور چین کے اہم مفادات کی حمایت کرتا ہے، پاکستان کی خواہش ہے کہ چین سے مضبوط تعلقات قائم ہوں، جو معیشت، تجارت اور سیکیورٹی کے معاملات پر مزید گہرے اور سی پیک کی تعمیر، عالمی اور علاقائی تعاون کی صورت میں مزید دیرپا ہوں گے، پاکستان عالمی امن واستحکام کے قیام کیلیے چین کے بین الاقوامی بڑے کردارکا حامی ہے۔

 

 



متعللقہ خبریں