چشمہ امن آپریشن

مقصد امن
ہدف دہشت گردی

پاکستان میں جمہوریت بھٹو کے لہو سے سینچی گئی ہے، بھٹو آج بھی پاکستانیوں کے دلوں کا حکمران ہے

ذوالفقار علی بھٹو کی پھانسی کو 39 سال گزر جانے کے بعد بھی ان کی مقبولیت میں کمی نہیں آئی۔ ان کی برسی کی مرکزی تقریب آج گھڑی خدا بخش میں ہو گی

پاکستان  میں جمہوریت  بھٹو کے لہو سے سینچی گئی ہے، بھٹو آج بھی پاکستانیوں کے دلوں کا حکمران ہے

پیپلز پارٹی کے بانی، سابق وزیر اعظم ذوالفقار علی بھٹو کی 39 ویں برسی آج ملک بھر میں عقید ت واحترام سے منائی جا رہی ہے۔

اپنے پیغامات میں سابق صدر اور پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ شہید بھٹو امید کا منارہ نور تھے اور آنے والے وقتوں میں بھی وہ امید کا منارہ نور رہیں گےانہوں نے کہا کہ  جمہوریت، شہری آزادیوں اور صوبائی خود مختاری کیلئے پارٹی پرعزم رہے گی۔ انہوں نے اپنے پیغام میں کہا شہید بھٹو نے ملک کو متفقہ آئین دیا جس کی بنیاد انسانی حقوق اور صوبائی خودمختاری کے اصولوں پر ہے، تبدیلی ووٹ کے ذریعے آنی چاہیے نہ کہ گولی کے ذریعے اور یہی پارٹی کے بانی چیئرمین کا دیا ہوا سیاسی سبق ہے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا پاکستانی قوم شہید ذوالفقار علی بھٹو کو کھونے کا درد صدیوں تک محسوس کرتی رہے گی، لیکن جنہوں نے اس عظیم لیڈر کی جان لی، وہ آج تاریخ کے کوڑے دان میں پڑے ہیں۔ انہوں نے حقیقی جمہوریت کی بنیاد حق رائے دہی پر قائم پارلیمانی نظام پر رکھی۔  

سابق وزیر اعظم ذوالفقار بھٹو کو جنرل ضیاالحق کے مارشل لا دور حکومت میں 4 اپریل 1979 میں ایک متنازعہ ٹرائل کے بعد راولپنڈی میں پھانسی دید ی گئی جسے بعد ازاں عدالتی قتل قرار دیا گیا۔ ذوالفقار علی بھٹو کی پھانسی کو 39 سال گزر جانے کے بعد بھی ان کی مقبولیت میں کمی نہیں آئی۔ ان کی برسی کی مرکزی تقریب آج گھڑی خدا بخش میں ہو گی جس میں پورے ملک سے پیپلزپارٹی کے کارکن شریک ہو نگے۔

پیپلز پارٹی سنٹرل پنجاب سیکرٹریٹ میں بھی 4 اپریل 3 بجے سہ پہر قرآن خوانی کا اہتمام کیا جائیگا۔

پیپلز پارٹی پنجاب اور لاہور کے مختلف ونگز کے قافلے گزشتہ روز ٹرین اور بسوں کے ذریعے گڑھی خدا بخش کیلئے روانہ ہوگئے۔



متعللقہ خبریں