سفارتکاروں کے تحفظ کے لیے پاک ۔ بھارت سمجھوتہ طے

سیکورٹی تحفظات پر عندیہ دیے جانے کے بعد پاکستانی کمشنر سہیل محمود نے گزشتہ ہفتے اجمیر شریف میں خواجہ معین الدین چشتی کے عرس میں شرکت کی

941538
سفارتکاروں کے تحفظ کے لیے پاک ۔ بھارت سمجھوتہ طے

پاکستان اور بھارت نے دونوں ممالک میں سفارت کاروں کو ہراساں کرنے کی شکایات  پر توجہ دیتے ہوئے  اس مسئلے کو حل کرنے پر  اتفاق قائم  کر لیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ1992 کے ضابطہ اخلاق کے تحت ان شکایات کو دور کیا جائے گا۔

پاکستان کے دفتر خارجہ اور بھارت کی وزارت برائے   امورِ خارجہ  نے  اس حوالے سے  بیک وقت ایک بیان  جاری کرتے ہوئے  ان غیر خواہش کردہ  واقعات کا سد باب کرنے کی کوششیں صرف کرنے کا اعلان کیا ہے۔

خیال رہے کہ پاکستانی سفارت کاروں کو نئی دہلی میں ہراساں کیے جانے کے مختلف واقعات کے بعد پاکستانی ہائی کمشنر سہیل محمود کو مشاورت  کے زیر ِ مقصد اسلام آباد واپس  طلب کر لیا گیا  تھا، اسی دوران بھارت کی جانب سے بھی اسلام آباد  میں ان کے سفارت کاروں کے ساتھ برتاؤ کے حوالے سے شکایات سامنے آئی تھیں۔

پاکستان کا کہنا  تھا کہ 7 تا  23 پاکستانی سفارت کاروں اور ان کے اہل خانہ کو ہراساں کرنے کے 50 سے زائد واقعات  پیش آئے ہیں۔

اس معاملے کو حل کرنے کے ہونے والی بات میں اہم پیش رفت اس وقت ہوئی جب پاکستانی ہائی کمشنر سہیل محمود گزشتہ ہفتے واپس نئی دہلی گئے، اس کے ساتھ ساتھ پس پردہ مذاکرات کے بعد ان کی  اجمیر شریف میں خواجہ معین الدین چشتی کے عرس میں شرکت ممکن ہوئی تھی۔

 



متعللقہ خبریں