پاکستان کی معاشی اقتصادی اعشاریوں میں بہتری، ترقی کی جانب گامزن: آئی ایم ایف

عالمی مالیاتی فنڈ نے وزارت خزانہ اور اسٹیٹ بینک کے ساتھ مذاکرات کے بعد جاری اعلامیے میں کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری میں سرمایہ کاری کی وجہ سے پاکستان میں معاشی ترقی ہورہی ہے

706881
پاکستان کی معاشی اقتصادی اعشاریوں میں بہتری، ترقی  کی جانب گامزن: آئی ایم ایف

عالمی مالیاتی فنڈ ( آئی ایم ایف)  کے مطابق  پاکستان کے معاشی اقتصادی اعشاریوں میں بہتری آئی ہے  جس کی بدولت پاکستان  بڑی سرعت سے ترقی کی جانب گامزن ہے اور علاقے میں کئی ایک ممالک کو ترقی کے لحاظ سے اپنے پیچھے   چھوڑدیا ہے۔

پاکستان کا شمار دنیا کی دس ابھرتی ہوئی معیشتوں میں ہونے لگا ہے اور یہ سب موجودہ حکومت کی معاشی اصلاحات کی بدولت ممکن ہوا ہے۔ آئی ایم ایف کی  پاکستان کی معاشی پوزیشن کے حوالہ سے بزنس رپورٹ 2017جاری ہوئی ہے جس میں پاکستان کی معیشت نے بہتر کارگردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے دنیا کے 190میں سے 144ویں ملک کی حیثیت حاصل کرلی ہے۔

عالمی مالیاتی فنڈ نے وزارت خزانہ اور اسٹیٹ بینک کے ساتھ مذاکرات کے بعد جاری اعلامیے میں کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری میں سرمایہ کاری کی وجہ سے پاکستان میں معاشی ترقی ہورہی ہے جب کہ معیشت میں اصلاحات نے پاکستان کو معاشی ترقی حاصل کرنے میں مدد فراہم کی، مالی سال 17-2016 کے دوران پاکستانی معاشی شرح نمو 5 فی صد کی شرح سے ترقی کرسکتی ہے اور بجلی کی فراہمی بہتر ہونے پر معاشی ترقی 6 فی صد تک بھی پہنچ سکتی ہے۔

 2016میں اس رپورٹ کی درجہ بندی کے مطابق پاکستان 148ویں نمبرپر تھا۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کا شمار ان دس بڑی معیشتوں میں ہونے لگا ہے جن کی معاشی صورتحال میں بہتری آئی ہے۔جنوبی ایشیا میں پاکستان واحد ملک ہے جس نے اس رپورٹ کے مطابق اپنی معاشی صورت حال بہتر کی ہے۔ پاکستان جنوبی ایشیا میں پہلا ملک ہے جس نے زمینی ریکارڈ کی بہتری کیلئے ٹیکنالوجی انفارمیشن سسٹم متعارف کروایا اور اس مقصد کیلئے پنجاب میں اداروں کو مضبوط کیا گیا جن کے ذریعے زمین کے ریکارڈ کا ایک خود کا ر نظام بنایا گیا ہے 

دوسری جانب آئی ایم ایف حکام سے مذاکرات کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیرخزانہ اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف حکام سے ملاقات قابل اطمینان بخش اور سیر حاصل رہی جب کہ حکام نے پاکستانی معیشت کی ترقی پر اطمینان کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی جی ڈی پی گروتھ گزشتہ 10 سال کے مقابلے میں بلندترین سطح پر ہے اور رواں سال امید ہے کہ اس میں مزید 5 فیصد اضافہ ہوگا۔

پاکستان میں سرمایہ کاری کے لیے دنیا کے دوسرے ممالک کا دلچسپی لینا چین پاکستان اقتصادی راہداری کی وجہ سے ممکن ہوا ہے ۔ جغرافیائی نقظہ نظر سے پاکستان وسط ایشیائی ریاستوں کے لیے واحد زمینی راستہ ہے ۔ جوں جوں ترقیاتی منصوبے مکمل ہوں گے پاکستان میں ترقی کی مزید راہیں کُھلیں گی اور پاکستان جنوبی ایشیا میں معاشی ٹائیگر کے طور پر سامنے آئے گا جس کی توقع دنیا کے عالمی اقتصادی ادارے بھی کر رہے ہیں ۔

 



متعللقہ خبریں