پاکستان میں تیل اور گیس کےنئے ذخائر دریافت

تیل و گیس تلاش کرنے والی کمپنیوں نے ہائیڈروکاربنز کے جو ذخائر دریافت کیے ہیں ان میں 6 کنویں شامل ہیں جن سے مجموعی طور پر 50.1 ملین کیوبک فٹ گیس اور 2,359 بیرل تیل روزانہ حاصل ہوگا

پاکستان میں تیل اور گیس کےنئے ذخائر دریافت

اس ماہ پاکستان میں تیل اور گیس کے ریکارڈ ذخائر دریافت ہوئے ہیں جو ملکی معیشت پر اچھے اثرات مرتب کریں گے۔

ان خیالات کا اظہار  وفاقی وزیربرائے پیٹرولیم اور قدرتی وسائل شاہد خاقان عباسی نے قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے پیٹرولیم اور قدرتی وسائل کے اجلاس میں کیا۔

انہوں نے بتایا کہ  تیل و گیس تلاش کرنے والی کمپنیوں نے ہائیڈروکاربنز کے جو ذخائر دریافت کیے ہیں ان میں 6 کنویں شامل ہیں جن سے مجموعی طور پر 50.1 ملین کیوبک فٹ گیس اور 2,359 بیرل تیل روزانہ حاصل ہوگا۔

 ذخائر کی اکثریت سندھ میں دریافت ہوئی ہے جو ہائیڈروکاربنز کی دریافتوں میں پہلے ہی سب سے نمایاں صوبہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ   4 ذخائر صوبہ سندھ اور 2 صوبہ خیبر پختونخوا میں دریافت ہوئے ہیں اور دریافت کی رو سے خیبرپختونخوا سے 31.6 ملین کیوبک فٹ گیس اور 339 بیرل روزانہ تیل نکالا جائے گا جب کہ سندھ سے 2,020 بیرل تیل روزانہ اور 18.5 ملین کیوبک فٹ گیس ملے گی۔

وفاقی وزیر پیٹرولیم نے بتایا کہ ملک میں قدرتی وسائل کی تلاش کے لیے یہ مطالعہ جنوری 2014 میں یو ایس ایڈ کے تعاون سے شروع کیا گیا جو رواں ماہ مکمل ہوا اور اس میں تیل و گیس کے مذکورہ ذخائر کی تصدیق ہوئی۔

انہوں نے کہا کہ نتائج مرتب کرنے کے لئے ایک ہزار 611 کنوؤں کا ڈیٹا حاصل کیا گیا اور ایک ہزار 312 کنوؤں کی کھدائی عمل میں لائی گئی اور یہ مطالعہ وسطی اور زیریں سندھ طاس میں کیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ان علاقوں سے حاصل ہونے والے نمونے امریکی ریاست ہیوسٹن کی نیو ٹیک لیبارٹری میں بھجوا دیئے گئے ہیں۔

شاہد خاقان عباسی نے مزید کہا کہ زیر زمین ان ذخائر کو نکالنے کے لیے پاکستان میں ٹیکنالوجی موجود ہے، تاہم بڑے پیمانے پر ان ذخائر کو نکالنے کے لیے مزید ٹیکنالوجی درکار ہوگی۔

ان کا کہنا تھا کہ ان ذخائر کو نکالنے کے لیے ماحولیاتی مسائل، پانی کی دستیابی اور ڈرلنگ کے لیے پیسوں کی ضرورت جیسے چیلنجز کا سامنا ہے۔

 



متعللقہ خبریں