پاکستان بھارت کے ساتھ با مقصد مذکرات کا خواہاں ہے. نواز شریف

پاکستان کے میاں محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ اگر بھارت تعلقات کی بحالی چاہتاہے تو اسے مسئلہ کشمیر پر مکمل سنجیدگی کے ساتھ بات چیت کرنی چاہیے۔ پاکستان احترام وقار اور خودداری کی بنیاد پر بھارت کے ساتھ تعلقات چاہتاہے

پاکستان بھارت کے ساتھ با مقصد مذکرات کا خواہاں ہے. نواز شریف

پاکستان کے میاں محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ اگر بھارت تعلقات کی بحالی چاہتاہے تو اسے مسئلہ کشمیر پر مکمل سنجیدگی کے ساتھ بات چیت کرنی چاہیے۔
انہوں نے کہا ہے کہ پاکستان احترام وقار اور خودداری کی بنیاد پر بھارت کے ساتھ تعلقات چاہتاہے اور مسئلہ کشمیر سمیت تمام مسائل کے با مقصد مذاکرات سے حل کا خواہاں ہے۔
وزیراعظم کے خصوصی طیارے میں اٹھارویں سارک سربراہ اجلاس کیلئے اپنے ہمراہ جانے والے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ انہوں نے اپنے بھارتی ہم منصب سے دو مرتبہ مصافحہ کیا اور مسکراہٹوں کا تبادلہ کیا۔
تاہم انہوں نے کہا کہ بھارت کو اگست میں سیکرٹری خارجہ سطح کے مذاکرات منسوخ نہیں کرنا چاہیے تھا،کیونکہ نئی دہلی میں وزیراعظم مودی کی تقریب حلف برداری کے موقع پر میری ان کے ساتھ ملاقات میں اتفاق ہوچکا تھا۔وزیراعظم نے کہا کہ ماضی میں جب کبھی پاکستان اور بھارت کے درمیان بات چیت ہوئی ہم نے کشمیر ی قیادت کے ساتھ بھی بات چیت کی، انہوں نے کہا کہ یہ کوئی نئی بات نہیں تھی کیونکہ ہمیں اہم نوعیت کے مسئلہ پر کشمیری رہنماؤں کی رائے لینا ہوتی ہے۔
عمران خان کی تیس نومبر کے احتجاج کی اپیل کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے سربراہ ذاتی ایجنڈے پر چل رہے ہیں، جس کا مقصد پاکستان کی ترقی او ر خوشحالی کو نشانہ بنانا ہے۔
انہوں نے کہا پاکستان کے عوام نے منفی سیاست کو مسترد کردیاہے کیوں کہ وہ جانتے ہیں کہ عوام کی فلاح و بہبود کیلئے کون مخلص اور ملک کی ترقی و خوشحالی کیلئے پرعزم ہے۔وزیراعظم نے کہا کہ ملک پھر ترقی کی راہ پر گامزن ہوچکا انہوں نے سکوک بانڈ کے کامیاب اجراء کا ذکر کیا جس سے ایک ارب ڈالر حاصل ہوں گے۔
انہوں نے کہا کہ اشیائے خوردونوش کی قیمتیں کم ہورہی ہیں اور عوام کو جلد اس کے فوائد حاصل ہوں گے۔

 


ٹیگز:

متعللقہ خبریں